.

طالبان حملے کے بعد افغان فوج کا سربراہ اور وزیر دفاع مستعفی!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغان آرمی چیف اور وزیر دفاع نے مزار شریف واقعہ پر استعفیٰ دینے کا اعلان کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق چند 4 روز قبل افغانستان کے شہر مزار شریف پر ہونے والے حملے کے ردعمل میں آرمی چیف جنرل شیر محمد کریمی اور وزیر دفاع عبداللہ حبیبی نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دیدیا ہے۔

ترجمان افغان صدارتی محل کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ صوبہ بلخ کے شہر مزار شریف میں فوجی تربیتی مرکز پر حملہ تاریخ کا بدترین حملہ تھا جب کہ افغان حکام نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ افغان آرمی چیف اور وزیر دفاع نے مزار شریف حملے پر استعفیٰ دیا ہے۔

واضح رہے کہ 4 روز قبل مزار شریف میں فوجی تربیتی مرکز پر ہونے والے حملے میں 170 فوجی ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے۔