.

قطر کا بحران .. سعودی فرماں روا اور روسی صدر کے درمیان رابطہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے روسی صدر ولادی میر پوتین سے منگل کے روز ٹیلی فون پر بات چیت کی ہے۔کریملن کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق دونوں رہ نماؤں نے قطری بحران پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

کچھ عرصہ قبل سعودی عرب، مصر، امارات اور بحرین کی جانب سے جاری بیان میں 59 افراد اور 12 اداروں اور تنظیموں کو دہشت گردی سے متعلق کالعدم عناصر کی فہرستوں میں شامل کرنے کا اعلان سامنے آیا۔ ان عناصر کو قطر کی جانب سے مالی اور ہتھیاروں کی سپورٹ حاصل ہے۔

چاروں ممالک کے مشترکہ بیان میں قطر کی پالیسی کے دُہرے پن کی جانب بھی اشارہ کیا گیا جو ایک طرف دہشت گردی کے خلاف جنگ کا اعلان کرتا ہے اور دوسری جانب مختلف دہشت گرد تنظیموں کو فنڈنگ ، سپورٹ اور پناہ فراہم کر رہا ہے۔

اس سے قبل سعودی عرب، امارات، بحرین اور مصر سمیت کئی ممالک نے دوحہ کی جانب سے شدت پسند جماعتوں (الاخوان، حوثی، القاعدہ، داعش) کی سپورٹ اور خلیجی ممالک کے مقابلے میں ایران کے لیے سپورٹ کے علاوہ ان ممالک کے عدم استحکام کے لیے کام کرنے کے سبب قطر کے ساتھ اپنے تعلقات منقطع کرنے کا اعلان کیا تھا۔