.

رابرٹ موگابے اور ان کی اہلیہ کی الوداعی ’گولڈن ٹپ‘

ملک مقروض، عوام غریب مگر سابق صدر کے لیے ہر سہولت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

زمبابوے کے سبکدوش ہونے والے صدر رابرٹ موگابے اگرچہ اقتدار میں نہیں رہے مگر وہ اور ان کی اہلیہ کروڑوں ڈالر کی الوداعی ٹپ وصول کریں گے۔ یہ رقم گذشتہ ہفتے استعفے سے قبل ہونے والے مذاکرات میں طے پائے معاہدے کا حصہ ہے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق فی الحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ رابرٹ موگابے اور ان کی اہلیہ انگریسن کتنی رقم حاصل کریں گے تاہم حکمراں جماعت کے ایک سینیر عہدیدار کا کہنا ہے کہ سبکدوش صدر اور ان کی اہلیہ کو ملنے والی رقم 10 ملین ڈالر سے کم نہیں ہوگی۔

اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر حکمراں جماعت کے عہدیدار نے بتایا کہ رابرٹ موگابے کو آئینی تحفظ حاصل ہوگا اور ان کے خاندان کے تجارتی مفادات کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جائے گی۔ انہیں فوری طور پر 50 لاکھ ڈالر کی نقد رقم ادا کی جائے گی۔ بقیہ رقم آئندہ چند ماہ کے دوران ادا کی جائے گی۔

اخباری رپورٹ کے مطابق 93 سالہ موگابے تا حیات ماہانہ ڈیڑھ لاکھ ڈالر پنشن لیں گے جب کہ ان کہ 52 سالہ اہلیہ جو اپنی فضول خرچی میں مشہور ہیں شوہر کو ملنے والی مالی مراعات کا نصف حاصل کریں گی۔

خیال رہے کہ رابرٹ موگابے نے 37 سال زمبابوے پر حکومت کی۔ وہ ملک کو بے روزگاری، غربت اور قرضوں کے بوجھ سے نہیں نکال سکے۔ موگابے کی رخصتی کے بعد کا موگابے آج بھی غریب، مقروض بے روزگاری کی آماج گاہ ہے جہاں 80 فی صد افراد کو روزگار میسر نہیں۔ بڑے شہروں کے سوا چھوٹے شہروں اور دیہاتوں میں سڑکیں ہیں اور نہ ہی بجلی ہے، صحت کی سہولیات ہیں اور نہ بچوں کو تعلیم دینے کے لیے اسکول ہیں۔

برطانوی اخبار کے مطابق سابق صدر اور سابق خاتون اول دارالحکومت ہرارے میں قائم نیلی چھت والے محل میں مقیم رہیں گے۔

حکومت انہیں ہر قسم کی طبی سہولیات فراہم کرے گی، خدمت کے لیے ملازم، سیکیورٹی اور بیرون ملک سفر کے لیے ہر ممکن سہولت مہیا کی جائے گی۔