.

جنوبی کوریئن پاپ اسٹار کا جنازہ، باحجاب خاتون میڈیا کی توجہ کا مرکز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنوبی کوریا کے سرکاری ذرائع ابلاغ میں ایک وڈیو کلپ گردش میں آیا ہے جس میں پاپ سُپر اسٹار جونگ ہیون کے جنازے میں اسکارف پہنی ہوئی ایک خاتون کو نمایاں طور پر دیکھا جا سکتا ہے۔ جنوبی کوریا کا 27 سالہ پاپ اسٹار جونگ ہیون پیر کو مردہ پایا گیا تھا۔ اس کی خودکشی نے دنیا بھر میں سنسنی پیدا کر دی۔

تو جناب حجاب میں ملبوس خاتون دراصل العربیہ نیوز چینل کی صحافی اشواق العتولی ہیں۔ وہ العربیہ کے مارننگ شو میں جنوبی کوریا سے متعلق مواد تیار اور پیش کرنے کی ذمّے داری اشواق کے پاس ہے۔

پیر کے روز جونگ ہیون کی موت کے حوالے سے متضاد خبروں اور افواہوں کے پھیلنے کے بعد اشواق نے ہسپتال کا رخ کیا جہاں ہیون کو اُس کے فلیٹ میں بے ہوش پانے کے بعد منتقل کیا گیا تھا۔ ہیون نے یہ فلیٹ کرائے پر لیا تھا تا کہ جلتے کوئلے کا استعمال کرتے ہوئے اپنی خودکشی کے ارادے کو عملی جامہ پہنا سکے۔

اشواق نے العربیہ کی ٹیم کے ساتھ کسی ڈاکٹر سے ملاقات کی کوشش کی تا کہ مزید تفصیل سامنے آ سکے تاہم یہ معاملہ دشوار رہا۔

اگلے روز ہیون کے گروپ شینی کی منتظم کمپنیSM انٹرٹینمینٹ اور پولیس نے شدید ڈپریشن کا شکار اس پاپ سُپر اسٹار کی موت کی تصدیق کر دی۔

ہیون اپنے نئے سولو البم کی تیاری کے اختتام کے قریب پہنچ چکا تھا۔

اشواق العتولی العربیہ نیوز چینل کے مارننگ شو "صباح العربیہ" میں براہ راست نشریات میں جونگ ہیون کے جنازے کی تفصیلات سے آگاہ کرتی رہیں۔ غمگین ماحول کے سبب دشواریوں کے باوجود اشواق کی جانب سے پیشہ ورانہ انداز سے ایونٹ کی کوریج کو عرب ناظرین نے بے حد سراہا۔ اس حوالے سے سوشل میڈیا پر العربیہ نیوز چینل کی خاتون صحافی کے لیے اظہارِ تشکر کے واسطے بڑی تعداد میں پیغامات بھیجے گئے۔ واضح رہے کہ اشواق ذاتی طور پر خود بھی جنوبی کوریائی گلوکار جونگ ہیون کی پرستاروں میں شامل ہیں۔