.

عُمَانی وزیر خارجہ کا منفرد دورہ "مسجد اقصی"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سلطنتِ عُمَان کے خارجہ امور کے وزیر یوسف بن علوی بن عبداللہ نے جمعرات کے روز مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصی کا دورہ کیا۔ یہ کسی بھی عرب عہدے دار کا اس مقدس جگہ کا منفرد دورہ ہے۔

اس موقع پر عمانی وزیر کا استقبال کرنے والوں میں بیت المقدس میں اسلامی اوقاف کے ڈائریکٹر شیخ عزام الخطیب، مسجد اقصی کے ڈائریکٹر شیخ عمر الکسوانی اور بیت المقدس گورنری کے نائب سربراہ شامل تھے۔ عزام الخطیب کا کہنا تھا کہ "یہ بیت المقدس کے لوگوں اور مسجد اقصی کی سپورٹ کے لیے ایک تاریخی دورہ ہے"۔

عمانی وزیر رام اللہ میں فلسطینی صدر محمود عباس سے ملاقات کے بعد بیت المقدس پہنچے تھے۔ انہوں نے گنبد صخرہ اور مسجد اقصی کا دورہ کیا۔

مسجد اقصی کے بد عمانی وزیر بیت المقدس کے القدیمہ ٹاون میں واقع قیامہ چرچ روانہ ہو گئے۔ اس کلیسا کو دنیا بھر میں مسیحیوں کا قدیم ترین اور اہم ترین مقام شمار کیا جاتا ہے۔

اس سے قبل مصر کے مفتی اعظم شیخ علی جمعہ نے اپریل 2012 میں ایک اردنی شہزدے کے ہمراہ مسجد اقصی کا دورہ کیا تھا۔ اسرائیل جس نے 1994 میں اردن کے ساتھ امن معاہدے پر دستخط کیے تھے، وہ بیت المقدس میں اسلامی مقدس مقامات کے لیے اردن کی نگرانی کو تسلیم کرتا ہے۔

رام اللہ میں عمانی وزیر نے باور کرایا کہ "ہمارے عرب برادران جہاں کہیں بھی ہوں، ہم پر لازم ہے کہ فلسطین آنے کے لیے ان کی حوصلہ افزائی کریں۔ درحقیقت مطلوب امر یہ ہے کہ وہ فلسطینیوں کو آ کر دیکھیں"۔