.

سعودی عرب عالمی معیشت میں قوّتِ محرکہ کی حیثیت رکھتا ہے: حاکمِ دبئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے نائب صدر ، وزیراعظم اور دبئی کے حاکم شیخ محمد بن راشد آلِ مکتوم نے کہا ہے کہ سعودی عرب عالمی معیشت کے لیے ایک قوّتِ محرکہ کے کردار کا حامل ہے۔

انھوں نے یہ بات الریاض میں منعقدہ ’مستقبل سرمایہ کاری اقدام فورم ‘کے دوسرے ایڈیشن میں گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔اس تین روزہ فورم میں متحدہ عرب امارات سے ڈیڑھ سو سے زیادہ وزراء ، سینیر کاروباری انتظامی عہدے دار اور سرمایہ کار شرکت کررہے ہیں۔شیخ محمد بن راشد نے شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ملاقات بھی کی ہے اور ان سے دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

امارات کی سرکاری خبررسا ں ایجنسی وام کے مطابق شیخ محمد بن راشد نے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی قیادت اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے زیر نگرانی شروع کیے گئے سعودی عرب کے ترقیاتی منصوبوں کی تعریف کی ہے۔انھوں نے مستقبل سرمایہ کاری اقدام فورم کے سازگار کاروباری ماحول پیدا کرنے کے مقاصد کو بھی سراہا ہے۔

شیخ محمد بن راشد نے عالمی سرمایہ کار کمیونٹی کے ساتھ تعاون بڑھانے کے لیے امارات کے ویژن پر روشنی ڈالتے ہوئےکہا کہ ’’ ہم عالمی کاروباری برادری کے ساتھ شراکت داری کو وسعت دینے کے لیے کام کررہے ہیں،پائیدار ترقی کے لیے منصوبوں کی بہترین بین الاقوامی لائحہ عمل پر عمل درآمد کے ذریعے حمایت کرتے ہیں ،جدید ٹیکنالوجی کو اختیار کرتے ہیں اور یہ آج مستقبل کی معیشت کے لیے اہم ستون بن چکے ہیں‘‘۔

سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے زیر اہتمام ہونے والے اس فورم کا مقصد مستقبل میں دنیا بھر میں سرمایہ کاری کے نئے رجحانات اور امکانات کو اجاگر کرنا ہے ۔اس سال کے ایڈیشن میں دنیا بھر سے 140 سے زیادہ تجارتی اور کاروباری تنظیموں سے تعلق رکھنے والے کم وبیش ڈیڑھ سو مقررین شرکت کررہے ہیں۔