.

سال 2018ء کے ظریفانہ لمحات : تھریزا مے کا رقص اور کِم جونگ کے محافظین کی لپک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سال 2018ء اختتام پذیر ہوا اور گزشتہ برسوں کی طرح اس سال بھی عالمی سیاسی واقعات کے ضمن میں کئی ظریفانہ لمحات دیکھنے میں آئے۔

میڈیا کے کیمروں میں محفوظ ہونے والے مذکورہ واقعات میں برطانیہ کی وزیراعظم تھریزا مے کے رقص اور شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے محافظین کی دوڑ کے علاوہ فلپائن کے صدر سے متعلق ان گنت انوکھی کارروائیاں نمایاں ترین ہیں۔ فلپائن کے صدر کے حوالے سے سب سے زیادہ متنازعہ واقعہ وہ مشہور بوسہ تھا جو صدر کی ایک پرستار نے سرعام اُن کے ہونٹوں پر دیا۔ اس کے نتیجے میں خواتین کی متعدد تنظیموں کی جانب سے شدید تنقید سامنے آئی۔

اکتوبر 2018 میں برطانوی خاتون وزیراعظم تھریزا مے حکمراں کنزرویٹو پارٹی کی سالانہ کانفرنس میں خطاب کے لیے اسٹیج پر نمودار ہوئیں تو انہوں نے پس منظر میں مشہور انگریزی گیتDancing Queen کی دُھن پر ہلکا پھلکا رقص بھی کر لیا۔ اگرچہ یہ پہلا موقع نہ تھا جب تھریزا نے کسی ایونٹ کے موقع پر رقص کیا ہو تاہم اس کے باوجود برطانوی وزیراعظم کی حرکت نے تنازع کھڑا کر دیا۔

گزشتہ سال اپریل میں شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن نے جنوبی کوریا کے صدر مون جے کے ساتھ تاریخی ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد کم جونگ سیاہ رنگ کی "مرسڈیز" کار میں سوار ہو کر روانہ ہوئے تو اس موقع پر سکیورٹی کے شدید انتظامات کیے گئے تھے۔ دنیا بھر میں لوگوں نے اپنی اسکرینوں پر شمالی کوریا کے سربراہ کی گاڑی کے ساتھ 12 محافظین کو لپک کر دوڑ لگاتے دیکھا۔

یہ ہی منظر جون کے مہینے میں دوبارہ دیکھا گیا جب کم جونگ اُن سنگاپور کے وزیراعظم سے ملاقات کے لیے اپنی گاڑی میں روانہ ہوئے تھے۔

گزشتہ برس دسمبر میں یورپی کمیشن کے سربراہ جان کلوڈ یونکر کی جانب سے ایک غیر ذمے دارانہ حرکت کا وڈیو کلپ منظر عام پر آیا جس نے مختلف حلقوں کی جانب سے کئی سوالات کو جنم دیا۔ وڈیو میں یونکر کو یورپی یونین کے صدر دفتر میں ایک خاتون کے بالوں سے کھیلتے ہوئے دیکھا گیا۔ یہ موقع تھا دسمبر میں "بریگزٹ" کے معاملے پر بحث کے سلسلے میں یورپی یونین کے اجلاس کا۔۔۔

اور غالبا سیاستی شخصیات کے درمیان ظریفانہ لمحات میں وہ چُٹکلا بھی ہے جو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جون میں شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے ساتھ تاریخی ملاقات کے دوران چھوڑا تھا۔ کھانے کی میز پر ٹرمپ نے فوٹوگرافروں سے کہا کہ وہ اُن کی خوب صورت تصاویر بنائیں جن میں دونوں سربراہان خوب صورت اور دبلے نظر آئیں۔

مذکورہ واقعات 2018 کے دوران کیمروں کی آنکھ میں محفوظ ہونے والے ظریفانہ لمحات کی ایک جھلک ہیں۔ یقینا ان کے علاوہ بھی اس نوعیت کے کئی واقعات منظر عام پر آئے جنہوں نے دیکھنے والوں کو بھرپور طریقے سے محظوظ کیا۔