ترکی، شام میں اکیلے ’’محفوظ علاقہ‘‘ بنا سکتا ہے: چاوش اوغلو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی کے وزیر خارجہ میولود چاوش اوغلو نے دعویٰ کیا ہے کہ ان کا ملک شام میں اکیلے’’محفوظ علاقہ‘‘ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے، تاہم اس معاملے میں امریکا، روس یا کسی بھی اور ملک کا تعاون خارج از امکان نہیں۔

چاوش اوغلو نے ان خیالات کا اظہار ترک نیوز چینل ’’الخبر‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس معاملے میں کچھ بھی حتمی نہیں تاہم چند ایشوز کے علاوہ امریکا اور ترکی کا ’’سیف زون‘‘ معاملے پر نقطہ نظر ملتا جلتا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ترکی اور امریکا کے درمیان شامی شہر منبج کے انتظامی کنڑول کے بارے میں مذاکرات ہوئے ہیں۔ یہ شہر اس وقت کردوں کے اتحادی ان جنگجووں کے کنڑول میں ہے جنہیں امریکا کی حمایت حاصل ہے۔

اعلی ترک سفارتکار نے اس امر کی بھی نشاندہی کی کہ شامی قضیئے کے سیاسی حل سے متعلق ترکی اور روس بھی ایک پیج پر ہیں، تاہم بشار الاسد حکومت کی بقاء سے سوال پر دونوں ملکوں میں اختلاف پایا جاتا ہے۔ ترک رہنما نے بتایا کہ انقرہ کے بشار الاسد حکومت سے بالواسطہ رابطے موجود ہی، تاہم انہوں نے ان کی کوئی تفصیل بتانے سے گریز کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں