.

اتنی دولت کا مستحق نہیں تھا ، قسمت سے مل گئی : بل گیٹس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چند روز قبل مائیکرو سوفٹ کے بانی بل گیٹس نے ایسا دھماکا خیز بیان دیا جس کے بارے میں کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔ بالخصوص جب کہ یہ دنیا کے ایک امیر ترین شخص کی جانب سے سامنے آیا ہو۔

گیٹس نے جو امریکا اور دنیا بھر میں نوجوانوں کے لیے ایک قابل تقلید نمونہ ہیں ،، اپنے بیان میں کہا کہ 1975 میں مائیکرو سوفٹ کارپوریشن قائم کرنے کے بعد سے انہوں جو دولت کمائی وہ اس کے مستحق نہیں تھے ،،، جیسا کہ دنیا بھر میں دیگر دولت مند اس کے مستحق نہیں ہوتے۔

گزشتہ ہفتے برطانوی اخبار ڈیلی میل سے بات کرتے ہوئے 65 سالہ گیٹس نے مزید کہا کہ انہوں نے اپنی دولت (جس کا اندازہ 73 ارب ڈالر لگایا گیا ہے) مناسب وقت اور قسمت کے علاوہ اپنے ساتھ کام کرنے والی ٹیم کی مہربانی سے کمائی۔ ان کا کہنا تھا کہ "میں نے 10 ارب ڈالر کے قریب ٹیکس ادا کیا مگر مجھے اس سے زیادہ ادا کرنا ہے"۔

گیٹس کے مطابق ان کا یہ خیال نہیں کہ اپنی اولاد کو مال دے دینا ان کے واسطے اچھا اور فائدہ مند ہو گا۔ گیٹس کا اشارہ اپنی تمام تر دولت کی جانب تھا۔

انہوں نے واضح کیا کہ "تمام تر واجبات کی ادائیگی اور کچھ مال اپنی اولاد کو دینے کے بعد میری دولت میں جو کچھ باقی بچے گا وہ سب فلاحی سوسائٹی کو جائے گا"۔ گیٹس کا اشارہ اپنی اہلیہ میلینڈا کے ساتھ مل کر قائم کی جانے والی سوسائٹی کی طرف تھا جو غریب ممالک میں غربت اور بیماریوں نمٹنے کے لیے نبرد آزما ہے۔

گیٹس اس سے قبل ایک بیان میں یہ باور کرا چکے ہیں کہ ان کی تینوں اولاد کو اپنے والدین کی جانب سے دولت کو فلاحی کاموں کے لیے عطیہ کرنے کے فیصلے پر فخر ہے۔