.

سری لنکا : ایسٹر کے موقع پر 8 دھماکے ، 207 افراد ہلاک اور 450 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سری لنکا میں اتوار کے روز ایسٹر کے موقع پر آٹھ دھماکوں میں 35 غیر ملکیوں سمیت 207 افراد ہلاک اور 450 سے زیادہ زخمی ہو گئے ہیں۔

پولیس کے مطابق دارالحکومت کولمبو میں تین بڑے ہوٹلوں اور ایک گرجا گھر کو بم حملوں میں نشانہ بنایا گیا ہے۔ دارالحکومت کے نزدیک دو اور گرجا گھروں میں دو بم حملے کیے گئے ہیں۔

ایک سری لنکن عہدے دار نے اپنی شناخت نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ دو دھماکوں کے بارے میں شبہ ہے کہ وہ خود کش بم باروں نے کیے ہیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی مِرر نے "سینٹ انتھونی" گرجا گھر کے اندر کی تصاویر جاری کی ہیں جن میں وہاں موجود افراد کو افراتفری کے عالم میں ادھر ادھر بھاگتے دیکھا جاسکتا ہے۔

امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق ایک دھماکا کولمبو کے "سینٹ انتھونی" چرچ میں ایسٹر کی تقریب کے دوران ہوا۔ اس کے علاوہ کولمبو کے شمال میں واقع قصبے نیگومبو میں "سینٹ سیبسٹین" گرجا گھر اور کولمبو کے شمال میں واقع شہر بٹی کلوا میں گرجا گھر "زيون" میں بھی دھماکے ہوئے۔

مقامی ٹیلی وژن چینلوں نے تین ہوٹلوں دی شینگریلا، سینامن گرانڈ اور کنگز بری کو پہنچنے والے نقصانات کی تصاویر نشر کی ہیں۔

مقامی میڈیا کے مطابق "سین سیبسٹین" گرجا گھر کی چھت زوردار دھماکے سے گر گئی،اس کی کھڑکیاں اور دروازے ٹوٹ ہو گئے۔نیگومبو چرچ نے اپنے فیس بک پیج پر بعض تصاویر شائع کی ہیں ان میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کچھ لوگ زخمی حالت میں زمین پر پڑے ہیں، کچھ لوگوں کے کپڑے خون آلود ہیں اور چرچ کی دیواروں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

سری لنکا کے سیکورٹی ذمے داران کا کہنا ہے کہ وہ دھماکوں کی تحقیقات کر رہے ہیں جب کہ تمام متاثرہ علاقوں کی فوری طور پر ناکا بندی کر دی گئی ہے۔دھماکوں کے بعد حکومت نے ملک بھر میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے اور سوشل میڈیا تک رسائی بھی بند کر دی ہے۔پورے ملک میں شام چھ سے صبح چھ بجے تک کرفیو لگا دیا گیا ہے۔دہشت گردی کے اس افسوسناک واقعے کے بعد سری لنکن وزیراعظم نے سیکیورٹی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے اور دو دن تک تعلیمی ادارے بند رکھنے کا اعلان کیا ہے۔