.

’’مصر اور سوڈان بھی حوثی حملوں کا ہدف بن سکتے ہیں‘‘

حوثیوں کی 'سباء' نیوز ایجنسی نے خبر چلا کر ہیکنگ کا شوشا چھوڑ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے حوثی باغیوں کی قائم کردہ 'سپریم سیاسی کونسل کے چیئرمین مہدی مشاط نے دھمکی دی ہے کہ وہ 'دشمن' ممالک کی تیل کی تنصیبات کو حملوں‌ کا نشانہ بنا سکتے ہیں۔ ان کا اشارہ سوڈان اور مصر کی جانب تھا جو یمن میں آئینی حکومت کی رِٹ کی بحالی کے لیے سرگرم عرب اتحادی فوج میں شامل ہیں۔

مہدی مشاط نے کہا کہ تیل کی تنصیبات اور بحیرہ روم وبحیرہ عرب سے گذرنے والے تیل بردار جہازوں کو 'نشانہ بنانا آئینی ہدف' ہے۔ وہ ان ملکوں کی تیل تنصیبات کو میزائلوں اور ڈرون طیاروں‌ کی مدد سے نشانہ بنا سکتے ہیں۔


یہ بیان 'سباء' نیوز ایجنسی کی طرف سے اپنی ویب سائٹ پر جاری کیا گیا۔ یمن کی 'سبا' خبر رساں ایجنسی حوثی باغیوں کی نگرانی میں کام کرتی ہے۔ نیوز ایجنسی کی ویب سائٹ پر مہدی مشاط کے ایک 'المسیرہ' ٹی وی چینل کو دیے گئے انٹرویو کا خلاصہ شائع کیا گیا اور ساتھ ہی کہا گیا تھا کہ جلد ہی ان کے انٹرویو کا مکمل متن شائع کیا جائے گا۔


یہ خبر پوسٹ کیے جانے کے کچھ دیر بعد وہ خبر ہٹا دی گئی اور اس کی جگہ ایک دوسری خبر یہ شائع کی گئی کہ 'سبا نیوز' ایجنسی کو ہیکروں نے ہیک کرلیا تھا۔ ویب سائٹ مہدی مشاط کے نام منسوب بیان کی کوئی صداقت نہیں۔

مہدی مشاط نے اپنے بیان میں دھمکی دی کہ ان کے میزائل اور ڈرون طیارے خلیجی ممالک کے کسی بھی مقام کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔


گذشتہ ہفتے بحرعمان میں دو تیل بردار جہازوں پر حملے کیے گئےتھے۔ انہوں‌ نے دھمکی دی کہ یمن پر 'جار حیت' کرنے والے ممالک جن میں سوڈان اور مصر بھی شامل ہیں ہمارے میزائلوں کے نشانے پر ہیں۔