.

لیبیا میں مہاجرین کے مرکز پر دو فضائی حملوں میں 53 افراد ہلاک ہوئے : اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کی جانب سے جاری ایک رپورٹ میں تصدیق کی گئی ہے کہ منگل کے روز لیبیا کے دارالحکومت طرابلس کے قریب تاجوراء مرکز برائے مہاجرین پر دو فضائی حملے کیے گئے۔

جمعرات کے روز سامنے آنے والی رپورٹ کے مطابق حملے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد 53 ہو گئی جن میں 6 بچے ہیں۔ واقعے میں 130 افراد زخمی بھی ہوئے۔

اقوام متحدہ کی رپورٹ میں موصولہ معلومات کے حوالے سے یہ بھی بتایا گیا ہے کہ لیبیائی محافظین نے اُن پناہ گزینوں اور مہاجرین پر فائرنگ کر دی جو تاجوراء مرکز پر ہونے والے فضائی حملے سے بچنے کے لیے فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

دوسری جانب لیبیا کی فوج نے وفاق کی حکومت کے زیر انتظام ملیشیاؤں پر الزام عائد کیا ہے انہوں نے غریان ہسپتال میں زیر علاج اپنے زخمی عناصر کو موت کی نیند سلا دیا۔

اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزین کے ترجمان چارلی یاکسلے کے مطابق اس بات کی تصدیق نہیں کی جا سکتی کہ تاجوراء مرکز پر کس نے حملہ کیا ، مرکز مین 600 کے قریب افراد نے پناہ لے رکھی تھی۔

اس سے قبل العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بدھ کے روز سلامتی کونسل کی طرف سے لیبیا میں افریقی مہاجرین کے مرکز پر بم باری کی مذمت میں ایک بیان تیار کیا گیا تھا مگر امریکا کی مداخلت سے وہ بیان جاری نہیں‌ کیا جا سکا۔ سفارتی ذرائع کے مطابق لیبیا میں مہاجرین کے مرکز پر کی گئی بم باری کے بعد سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا تھا۔ اجلاس دو گھنٹے جاری رہا۔ اس دوران برطانیہ کی طرف سے ایک بیان کا مسودہ پیش کیا گیا جس میں مرکز پر بم باری کی مذمت کے ساتھ متحارب فریقین کے درمیان بات چیت اور فوری جنگ بندی کی ضرورت پر زور دیا گیا۔ تاہم امریکا نے اس حوالے سے مذمت کا بیان جاری کرنے میں رکاوٹ کھڑی کر دی۔