.

کرونا وَباکے منفی اثرات؛سعودی عرب کا سیاحتی شعبہ بحال ہورہا ہے:وزیر خزانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر خزانہ محمد الجدعان نے کہا ہے کہ مملکت کا سیاحتی شعبہ کرونا وائرس کی وَبا کے منفی اثرات سے بتدریج نکل رہا ہے اور بحال ہورہا ہے۔

دنیا کے دوسرے ملکوں کی طرح کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد سعودی عرب کا سیاحتی شعبہ بھی بُری طرح متاثر ہوا ہے اور بین الاقوامی فضائی سرحدوں کی بندش اور مسافرپروازوں پر پابندی کے بعد دوسرے ممالک سے سیاحوں کی آمد ورفت معطل ہو کر رہ گئی تھی۔

وزیر خزانہ محمد الجدعان نے جمعرات کے روز یورو منی کے زیر اہتمام ایک ویڈیو کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کرونا وائرس کی وَبا کے اثرات سے نکل رہا ہے اور اس کی معیشت ہورہی ہے۔البتہ انھوں نے اس ضمن میں محتاط انداز میں خوش امیدی کا اظہار کیا ہے۔

انھوں نے نشان دہی کی ہے کہ سعودی عرب کے اقتصادی اصلاحات کے ویژن 2030 کو کووِڈ-19 کی وبا سے نمٹنے کے لیے اقدامات کے ضمن میں کلیدی اہمیت حاصل رہی ہے۔

محمد الجدعان نے کہا کہ سعودی عرب دنیا کی بیس بڑی معشیتوں پر مشتمل گروپ جی 20 کے سربراہ کی حیثیت سے اپنے کردار کے بارے میں پختہ عزم رہا ہے حالانکہ معاشی کساد بازاری کے لحاظ سے یہ ایک مشکل سال ہے لیکن جی 20 نے کووِڈ-19 کی وبا کے ردعمل میں فوری اور بے مثال اقدامات کیے تھے۔

انھوں نے واضح کیا کہ سعودی عرب کرونا وائرس کی وبا کے اثرات سے نمٹنے کے لیے ایک عالمی حکمت عملی پر عمل پیرا رہے گا کیونکہ اگر کوئی ایک ملک پیچھے رہ جاتا ہے تو ساری دنیا کو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔