لیبیا : سیاسی بحران کے خاتمے کے لیے سیف الاسلام قذافی کا منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا میں صدارتی انتخابات کے امیدوار سیف الاسلام قذافی نے ملک میں صدارتی انتخابات ملتوی کرنے اور پارلیمانی انتخابات فوری طور پر منعقد کرانے کی تجویز پیش کی ہے۔ اس تجویز کا مقصد ملک کو درپیش سیاسی بحران کا حل ہے۔ لیبیا میں حکام گذشتہ دسمبر میں انتخابات کے انعقاد سے قاصر رہے جب کہ تمام سیاسی فریق آئندہ مرحلے کے نقشہ راہ پر اتفاق رائے میں ناکام ہو گئے۔

سیف الاسلام قذافی کی یہ تجویز ان کی جانب سے اپنے وکیل خالد الزائدی کے ذریعے پیش کیے جانے والے منصوبے میں شامل ہے۔ سیف کے مطابق نئی پارلیمنٹ کا انتخاب ملک کو جنگ اور انقسام سے بچانے کے ساتھ ساتھ 25 لاکھ رائے دہندگان کے حق رائے شماری کا احترام کرے گا۔

سیف نے زور دیا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ نئے عبوری مراحل کا راستہ روک دیا جائے جو ملک کو باہمی لڑائی کی ایک نئی صورت حال کی نذر کر دیں گے۔ اس کی وجہ دو متوازی حکومتوں کا وجود ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ برس نومبر میں سبھا شہر میں صدارتی انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کے اگلے روز سے سیف الاسلام قذافی روپوش ہیں۔ اس روپوشی نے تنازع پیدا کر دیا جس کے بعد انتخابی کمیشن نے سیف الاسلام کو نامزد امیدواروں کی ابتدائی فہرست سے خارج کر دیا تھا۔ بعد ازاں سبھا کی عدالت نے ان کا نام صدارتی انتخابات کے لیے امیدواران کی حتمی فہرست میں شامل کرنے کا فیصلہ جاری کیا۔

انتخابات کے اجرا میں ناکامی کے ایک ماہ سے زیادہ عرصے کے بعد اس وقت لیبیا میں سیاسی منظرنامے کا مستقبل ابہام کا شکار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں