صنعاء کے ہوائی اڈے سے پہلی پرواز اتوار کو روانہ ہو گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمنی فضائی کمپنی کی جانب سے آئندہ اتوار کے روز صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے پہلی تجارتی پرواز چلائے جانے کے اعلان پر یمنی حلقوں نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ امن کی جانب ایک اہم قدم ہے جس سے یمن کے لیے خیر کا دروازہ کھلے گا۔

یمنی عوام نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ذریعے مطالبہ کیا کہ بند راستوں کو کھولا جائے تا کہ صوبوں اور شہروں کے بیچ زمینی طور سے آمد و رفت کو بنا خطرے کے آسان بنایا جا سکے۔ مزید یہ کہ دونوں جانب سے تمام قیدیوں کو بنا کسی استثنا آزاد کر دیا جائے۔

یمنی فضائی کمپنی نے کل بدھ کے روز اعلان کیا تھا کہ ہر ہفتے صنعاء کے ہوائی اڈے سے اردن کے دارالحکومت عمّان کے لیے ایک پرواز چلائی جائے گی۔ یہ اقدام رواں ماہ کے اوائل میں اقوام متحدہ کی جانب سے اعلان کردہ عارضی جنگ بندی کی شرائط میں شامل ہے۔

عوامی حلقوں نے جنگ بندی جاری رہنے اور خونریز جنگ کا حصار ٹوٹنے پر نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے۔

ایک یمنی شہری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو میں کہا کہ مسافروں کی زیادہ تر تعداد مریضوں اور جنگ میں زخمی ہونے والوں کی ہے۔ ان افراد کو ہنگامی طور پر آپریشن کی ضرورت ہے۔ لہذا ان میں زیادہ تر لوگ اردن اور قاہرہ جائیں گے جہاں وہ علاج کے بھاری اخراجات برداشت کریں گے۔ عوام نے پانچ برس کی بندش کے بعد صںعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو کھولے جانے کا خیر مقدم کیا ہے۔

اقوام متحدہ نے رواں ماہ کے اوائل میں یمن میں دو ماہ کے لیے جنگ بندی کا اعلان کیا تھا۔ اس جنگ بندی میں فوجی کارروائیوں کو روک دینا، تیل کی مصنوعات لے کر آنے والے بحری جہازوں کو الحدیدہ کی بندر گاہ میں داخلے کی اجازت دینا، صنعاء کے ہوائی اڈے سے ہر ہفتے دو پروازیں چلانا اور تعز سمیت یمن کے بعض صوبوں میں متعدد سرحدی راستوں کا کھولا جانا شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں