یوکرین کے خلاف روسی جنگ ۔ پوتین کے اتحادی روسی افواج کو تنقید کا نشانہ بنانے لگے

اعلی فوجی حکام کے تمغے چھین کر انہیں بندوق دے کر محاذ پر بھیجا جائے۔ رمضان قادروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روسی افواج کی تذویراتی اہمیت کے حامل یوکرینی مشرقی قصبے سے پسپائی کے بعد پوتین کے اہم اتحادیوں کی طرف سے روسی فوجی ذمہ داروں کو تضحیک کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ایسا کم ہی ہوا ہے کہ روسی افواج کے اعلیٰ حکام کو عوامی سطح پر ایسی صورت حال کا سامنا کرنا پڑا ہو۔

مگر لیمان کا مرکزی اہمیت کا حامل علاقہ ہاتھ سے جانے کے بعد ایک طرف لہانسک کے مغربی حصے خطرے کی زد میں آ گئے ہیں تو دوسری جانب اس نقصان کا اعصابی اثر پوٹن کے قریبی اتحادی اور چیچنیا کے رہنما رمضان قادروف پر بھی ہو گیا ہے۔

رمضان قادروف اہنے والد اور چیچنیا کے سابق صدر احمد کے 2004 میں گروزنی بم دھماکے میں مارے جانے کے بعد سے روسی صدر پوتین کے قریب ہیں۔ اس قدر دل برداشتہ ہوئے ہیں کہ روس کو یوکرین کے خلاف چھوٹے جوہری ہتھیار استعمال کرنے کے مشورے دینے لگے ہیں۔

ان کے جوہری ہتھیاروں کے مشورے کو انتباہ کے طور پر شہ سرخیوں میں جگہ مل رہی ہے۔ لیکن روس میں اعلی فوجی حکام کے لیے لیمان سے دستبرداری کی طعن اتنی عام ہونے لگی ہے کہ ماضی میں کبھی ایسا نہیں ہوا تھا کہ اعلیٰ فوجی حکام کو اس طرح عوامی سطح پر تنقید کا نشانہ بنایا جائے۔

اس کی بڑی وجہ کی طرف سے شروع ہونے والی کھلے عام کی جانے والی تنقید ہے۔ جس میں انہوں نے یہاں تک کہا ہے کہ ' اقربا پروری کسی اچھے نتیجے کی طرف نہیں لے کر جاتی ہے۔ '

رمضان قادروف نے اس سے بھی زیادہ سخت بات یہ کی ہے کہ ' روسی فوجی کمانڈروں سے ان کے تمغے چھین کر انہیں بندوق پکڑائی جائے اور لڑنے کے لیے محاذ پر بھیج دیا جائے۔ تاکہ یہ اپنی شرمندگی کو اپنے خون سے دھو سکیں۔ '

عوامی سطح پر روسی فوج کوجس تنقید کا سامنا ہے اس سے اندازہ کیا جا سکتا ہے کہ مایوسی کی سطح کیا ہے ۔ یہ روسی جرنیلوں کی تضحیک کا بھی باعث ہے اور پوٹن کے اس بیانیے کو نقصان پہنچا رہا ہے جو کریملن نے بڑی احتیاط کے ساتھ سنبھالنے کی کوشش کر رکھی ہے۔

اہم بات یہ بھی ہے کہ رمضان نہ صرف یوکرین کے خلاف جنگ کے حامی ہین بلکہ انہوں نے چیچنیا سے فوجی دستے بھی جنگ کے لیے روانہ کیے ہیں۔ لیکن قادروف کی تنقید روس کی جنگ لڑنے والی افواج کے لیے ایک تلخ سچ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں