زیلنسکی کو خودکشی کے لیے ’’ہٹلر کی پستول‘‘ دونگا: رمضان قادروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

چیچن رہنما رمضان قادروف نے ایک ٹی وی انٹرویو میں بظاہر یوکرین کے صدر زیلنسکی سے خودکشی کا مطالبہ کردیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ میرے پاس ایک بندوق ہے جو نازی جرمن رہنما ایڈولف ہٹلر کی اس بندوق سے بہت ملتی جلتی ہے جس سے ہٹلر نے خود کو گولی ماری تھی ۔ میں یہ بندوق زیلنسکی کے پاس بھیجو ں گا تاکہ وہ اس سے خودکو گولی مار سکیں۔

قادروف کریملن کا قریبی اتحادی ہے اور یوکرین کی سرزمین پر روسی افواج کے شانہ بشانہ لڑ رہا ہے۔ انہوں نے اپنے پاس موجود اس اہم ہتھیار پر بظاہر فخر کا اظہار کیا ہے۔ قادروف نے سکرین کے ذریعے اپنی تقریر کا رخ زیلنسکی کی طرف کرتے ہوئے کہا کہ ’’ میں اسی قسم کی بندوق اپنے پاس رکھتا ہوں جس بندوق سے ہٹلر نے خود کو گولی ماری تھی، میں اسے آپ کے پاس بھیجوں گا تاکہ آپ اس سے اپنے آپ کو گولی مار سکیں‘‘۔

تاہم اس منظر کے بعد متنازع چیچن رہنما کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا جارہا ہے۔ قادروف کے مخالفین اور کیف کے ساتھ ہمدردری رکھنے والے افراد نے قادروف کی تضحیک کی ہے۔ کچھ لوگوں نے قادروف کی بندوق کو صحیح طریقے سے ہٹانے میں ناکامی پر تنقید کی ہے۔ دوسروں نے ان کے اس دعوے کا مذاق اڑایا کہ یہ ہٹلر کی پستول سے ملتی جلتی تھی اور ان کا ایک رہنما اسے اس کے پاس لایا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی حقیقت میں نہیں جانتا کہ کس ہتھیار نے ہٹلر کی زندگی کا خاتمہ کیا تھا بس اتنا معلوم ہے کہ یہ 7.65 ملی میٹر والتھر پی پی یا والتھر پی پی کے پستول تھا۔

خیال رہے 24 فروری 2022 کو روس یوکرین جنگ کے آغاز کے بعد سے چیچن رہنما نے روسی افواج کی حمایت کی ہے۔ انہوں نے اپنے جنگجو مشرقی یوکرین میں بھیجے ہیں۔ قادروف اور اس کی ملیشیا پر چیچنیا میں بے شمار زیادتیوں کا الزام لگایا جاتا رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں