ایپل سیلائر بھارت میں نئی جنریشن کے آئی فون 15 تیار کرنا شروع کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایپل کارپوریشن کی نئی جنریشن کا آئی فون 15 تامل ناڈو میں اس کوشش میں اپنی پیداوار شروع کر رہا ہے کہ اس کے ہندوستانی آپریشنز اور چین میں مینوفیکچرنگ مرکز کے درمیان فاصلے کو مزید کم کیا جائے۔

اس معاملے سے واقف لوگوں نے بتایا کہ سریپرم بدور میں فاکس کان ٹیکنالوجی گروپ کا پلانٹ چین میں کارخانوں سے شپنگ شروع کرنے کے چند ہفتوں بعد ہی جدید ترین ڈیوائسز فراہم کرنے کی تیاری کر رہا ہے کیونکہ کمپنی بھارت سے آنے والے نئے آئی فونز کے حجم میں تیزی سے اضافہ چاہتی ہے۔

کیلیفورنیا میں قائم کپرٹینو فرم چین سے دور اپنی مینوفیکچرنگ کو متنوع بنانے کے لیے ایک کثیر سالہ منصوبے پر کام کر رہی ہے جس سے اس کی اہم ترین مصنوعات کے لیے سپلائی چین خطرے سے محفوظ ہو رہی ہے کیونکہ واشنگٹن اور بیجنگ کے درمیان تناؤ تجارت کو کم قابلِ پیش گوئی بنا دیتا ہے۔ وزیرِ اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ہندوستان نے امریکہ کے ساتھ قریبی تعلقات استوار کرنے اور خود کو مینوفیکچرنگ کا مرکز بنانے کی کوشش کی ہے۔

 ایپل کے سی ای او ٹم کک 18 اپریل 2023 کو ممبئی، انڈیا میں ہندوستان کے پہلے ایپل ریٹیل اسٹور کے افتتاح کے دوران۔ (رائٹرز)
ایپل کے سی ای او ٹم کک 18 اپریل 2023 کو ممبئی، انڈیا میں ہندوستان کے پہلے ایپل ریٹیل اسٹور کے افتتاح کے دوران۔ (رائٹرز)

آئی فون 14 سے پہلے ایپل کے پاس ہندوستان میں آئی فون اسمبلی کا صرف ایک معمولی سا حصہ تھا جو چین کی پیداوار سے چھ سے نو ماہ تک پیچھے تھا۔ اس تاخیر کو گذشتہ سال کافی حد تک کم کیا گیا تھا اور ایپل نے مارچ کے آخر میں ہندوستان میں اپنے 7 فیصد آئی فون تیار کیے تھے۔

اس سال کا مقصد ہندوستان اور چین سے شپمنٹ کے وقت پر برابری کے قریب جانا ہے اگرچہ سپلائرز کو ابھی تک یقین نہیں ہے کہ وہ اس میں کامیاب ہوں گے۔ معلومات فراہم کرنے والے لوگوں نے نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ معلومات عام نہیں ہیں۔

بھارت میں آئی فون 15 کس پیمانے پر تیار ہوسکیں گے، یہ ان پرزوں کی تیار دستیابی پر منحصر ہوگا جو بڑے پیمانے پر درآمد کیے جاتے ہیں۔ اور یہ چنئی سے باہر فاکس کان فیکٹری میں پروڈکشن لائنوں کے ہموار اضافے پر منحصر ہوگا۔

نیا آئی فون جس کا اعلان 12 ستمبر کو ہو گا، تین سالوں میں ڈیوائس کی سب سے بڑی اپ ڈیٹ ہونے کی یقین دہانی کرواتا ہے۔ اس کی پوری رینج میں کیمرہ سسٹم میں بڑے اپ گریڈ شامل ہوں گے اور پرو ماڈلز میں ایک بہتر 3-نینو میٹر اے16 پروسیسر ہوگا۔

ہینڈ سیٹس کی نئی فیملی کم ہوتی ہوئی فروخت کی بحالی کے لیے اہم ہے۔ ایپل نے اس مہینے اپنی فروخت میں مسلسل تیسری سہ ماہی میں کمی کی اطلاع دی جو امریکہ، چین اور یورپ جیسی اہم مارکیٹوں میں صارفین کی طلب میں کمی کی وجہ سے تھی۔

معاملے سے واقف لوگوں نے بتایا کہ بھارت میں ایپل کے دیگر سپلائرز – پیگاٹران کارپوریشن اور وِسٹران کارپوریشن فیکٹری جسے ٹاٹا گروپ حاصل کر رہا ہے - بھی جلد ہی ایپل 15 کو اسمبل کریں گے۔

ایپل کے ایک ترجمان اور وسٹرون اور پیگاٹرون کے نمائندوں نے اس پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔ فاکس کان نے تبصرہ کی درخواست کا جواب نہیں دیا۔

بلومبرگ نیوز نے پہلے رپورٹ کیا کہ مزید اعلیٰ درجے کی مینوفیکچرنگ لانے کے لیے مودی انتظامیہ کی کچھ مالی ترغیبات سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ایپل نے اپنے تائیوانی سپلائرز کے ذریعے ہندوستان میں مستقل طور پر توسیع کی ہے۔ اس سے ایپل کو مارچ میں ختم ہونے والے مالی سال میں ہندوستان میں آئی فون کی پیداوار کو تین گنا بڑھا کر 7 بلین ڈالر سے زیادہ کرنے میں مدد ملی ہے۔

ایپل جس نے اپریل میں ملک میں اپنے پہلے ریٹیل اسٹورز کھولے تھے، اب تیزی سے بڑھتی ہوئی ہندوستانی مارکیٹ کو ایک ریٹیل موقع اور اپنی مصنوعات کے ایک اہم پیداواری مرکز کے طور پر دیکھتا ہے۔ جون تک کی سہ ماہی میں بھارت میں آئی فون کی فروخت دو ہندسوں سے بڑھ کر ایک نئی بلندی تک پہنچ گئی اگرچہ ایپل نے درست تعداد ظاہر نہیں کی ہے۔

اپریل میں ہندوستان کے دورے پر مودی سے ملاقات کے بعد چیف ایگزیکٹو آفیسر ٹم کک نے کہا کہ ایپل ملک بھر میں ترقی اور سرمایہ کاری کے لیے پرعزم ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں