خرطوم میں زوردار دھماکہ،اسلحہ کے ذخائرپرنہیں گیس اسٹیشن کو نشانہ بنایا گیا:آرایس ایف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کل ہفتے کے روز سوڈانی دارالحکومت خرطوم کے مرکز میں ایک زبردست دھماکہ ہوا۔ریپڈ سپورٹ فورسز نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ بم دھماکے میں ہوائی اڈے پر اس کے ہتھیاروں کے گوداموں کو نشانہ نہیں بنایا گیا، بلکہ ایک قریبی گیس اسٹیشن کو نشانہ بنایا گیا۔

بتایا گیا ہے کہ دھماکہ ایک ایندھن ڈپو پر فضائی بمباری کا نتیجہ تھا جو ریپڈ سپورٹ فورسز کے کنٹرول میں ہے۔

سوڈان میں فوج نے خرطوم کے مرکز میں اور ریپبلکن محل کے آس پاس کے علاقوں میں ریپڈ سپورٹ فورسز کے ٹھکانوں پر بمباری کی جہاں آگ کے شعلے اور دھواں اٹھتا دکھائی دیا۔

ریپڈ سپورٹ فورسز نے خرطوم میں اپنی پوزیشنوں سے جوابی کارروائی کرتے ہوئے ام درمان کے مرکز میں سوڈانی فوج کے ٹھکانوں پر بمباری کی۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ فوج کے جنگی طیاروں کی جانب سے ہفتے کی صبح ریپڈ سپورٹ سینٹر کے مقامات پر فضائی بمباری کی گئی جو کئی ہفتوں میں سب سے زیادہ شدید بمباری تھی۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ بم دھماکے میں اسپورٹس سٹی کے علاقوں اور خرطوم کے جنوب میں ریپڈ سپورٹ فورسز کے کیمپوں کو نشانہ بنایا گیا۔

سوڈانی فوجی ذرائع نے عرب ورلڈ نیوز ایجنسی کو بتایا کہ خرطوم انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ایندھن کے ڈپو میں زبردست آگ بھڑک اٹھی۔ ذرائع نے نشاندہی کی کہ "جلنے والا گودام ریپڈ سپورٹ فورسز کے ہتھیاروں کے گودام سے متصل ہے۔"

العربیہ اور الحدث کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ سوڈانی فوج نے خرطوم میں جنرل کمان اور صدارتی محل کے قریب آر ایس ایف کے ٹھکانوں پر بمباری کی۔

انہوں نے یہ بھی اطلاع دی کہ سوڈانی دارالحکومت خرطوم کے مشرق میں کئی علاقے ریپڈ سپورٹ فورسز کی شدید توپ خانے کی بمباری کا سامنا کررہے ہیں۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پرانے ام درمان علاقے میں اسی طرح کی شدید بمباری ہو رہی ہے۔

دورسری طرف ام درمان کے بعض علاقوں کی سریع الحرکت فورسز کی طرف سے کی گئی ناکہ بندی کے باعث علاقے میں خوراک اور سبزیوں کا شدید بحران پیدا ہوگیا ہے۔

فوج خرطوم اور مغرب میں کوردوفان اور دارفور کے علاقوں میں آر ایس ایف سے لڑ رہی ہے ملک کے وسطی، شمالی اور مشرقی علاقوں میں خاموشی ہے اوریہاں پر فوج کا کنٹرول ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں