تونس نے یورپی پارلیمنٹ کے وفد کو اپنی سرزمین میں داخلے سے روک دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

تونس نے یورپی یونین کمیشن کے درمیان طے پانے والے ایمی گریشن معاہدے پر یورپی نمائندوں کی تنقید کے بعد یورپی پارلیمنٹ کے ایک وفد کو اپنی سرزمین میں داخل ہونے سے روک دیا۔

یہ وفد جس میں تین فرانسیسیوں سمیت پانچ نمائندے شامل ہیں کو کل جمعرات کو تونس جانا تھا تاکہ موجودہ سیاسی صورت حال کو بہتر طور پر سمجھ سکیں۔

جولائی کے وسط میں یورپی یونین اور تونس کے درمیان ایک معاہدے پر دستخط کیے گئے جس کا مقصد پناہ گزینوں کا یورپ کی طرف بہاؤ روکنے کے لیے اقدامات کرنا تھا۔

جرمن رُکن پارلیمنٹ مائیکل گہلر کی قیادت میں وفد نے سول سوسائٹی کے ارکان، ٹریڈ یونینوں اور تونس کی اپوزیشن کے نمائندوں سے ملاقات کرنا تھی۔

اس وفد کو لکھے گئے ایک خط میں تونس کے حکام نے یورپی پارلیمنٹ کی خارجہ امور کی کمیٹی میں ان نمائندوں کو یہ بتا کر خود کو مطمئن کیا کہ "انہیں تونس کی سرزمین میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔"

یورپی پارلیمنٹ کے رکن منیر الستاوری نے کہا کہ یہ حیران کن اور غیر معمولی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں