ایلون مسک نے اسرائیل کی بربادی بارے میں خامنہ ای کا ٹویٹ شیئر کرکے کیا پیغام دیا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متنازع امریکی ارب پتی ایلون مسک نے فلسطینیوں اور اسرائیلیوں کے درمیان بھڑکتے بحران میں داخل ہو کر ایک نیا تنازع کھڑا کردیا ہے۔ انہوں نے فلسطینیوں کی طرف سے شروع کیےگئے’طوفان الاقصیٰ‘ آپریشن کو ایران اسرائیل تعلقات سے جوڑنے کی کوشش کی ہے۔

ٹیسلا کے مالک نے ایرانی رہبر اعلیٰ علی خامنہ ای کا ایک ٹویٹ شیئر کیا جس میں انہوں نے ’اسرائیل کو ’کینسر کا ٹیومر‘ قرار دیتے ہوئے اسےختم کرنے کا مطالبہ کیا تھا‘۔

نفرت کی آگ بھڑکانے کا کوئی فائدہ نہیں

کل اتوار کی شام دیر گئے اپنے ‘X‘ اکاؤنٹ (سابقہ ٹویٹر) کے ذریعے ایک ٹویٹ میں ایلون مسک نے کہا کہ ایران کا اصل مقصد اسرائیلی وجود کومٹانا ہے فلسطینیوں کی مدد کرنا نہیں، مگر ایسا کبھی نہیں ہو گا"۔

انہوں نے کہا کہ دہائیوں سے جو کچھ ہو رہا ہے وہ تشدد اور انتقام کا ایک نہ ختم ہونے والا چکرہے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ نفرت کی آگ بھڑکانے کا کوئی فائدہ نہیں۔

اگلا قدم کیا ہوگا؟

ایلون مسک نے تکلیف دہ اقدامات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ نفرت انگیزبیانیہ اور تشدد کا مقابلہ کرنے کے لیے بہت سے اقدامات ہوسکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ "شاید کسی اور چیز کے بارے میں سوچنے کا وقت ہے" تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ آیا ان کا اشارہ کس چیز کے بارے میں سوچنے کا ہے؟۔

یہ ٹویٹ اس وقت سامنے آئی جب خامنہ ای نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ کے ذریعے پوسٹ کی گئی ٹویٹ میں کہا کہ "برہمی کا اظہار کرنے والی صہیونی ریاست پورے خطے میں کینسر کے پھوڑے کی طرح ہے جو فلسطینی عوام اور مزاحمتی قوتوں کے ہاتھوں ختم ہو جائے گا۔"

خیال رہے کہ ٹیسلا کے بانی کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف گذشتہ ہفتے کے روز فلسطینی تنظیموں نے اسرائیل پر تباہ کن حملہ کیا ہے۔ بعض ذرائع نے حزب اللہ اور حماس کے حوالے سے بتایا ہے کہ ’طوفان الاقصیٰ‘ حملے میں ایران نے مدد کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں