فلسطینی اپنی سرزمین میں رہتے ہیں، انہیں اپنی آزاد ریاست کے قیام کا حق ہے: روسی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس کے صدر ولادیمیر پوتین نے کہا ہے کہ اسرائیل کی طرف سے فلسطینیوں کو مصر چھوڑنے کا مطالبہ امن کے لیے نقصان دہ ثابت ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ فلسطینی اپنی سرزمین پر رہتے ہیں۔

الغد ٹی وی کو انٹرویو کے دوران پوتین نے کہا کہ "میرے لیے کوئی اندازہ لگانا مشکل ہے۔ فلسطینی جس سرزمین پر رہتے ہیں وہ تاریخی طور پر ان کی اپنی سرزمین ہے۔ فلسطینیوں کو اپنی ایک آزاد ریاست کے قیام کا حق ہے"۔

اس سے قبل بدھ کو ولادی میر پوتین نے امریکا پر الزام لگایا تھا کہ وہ فلسطینی اسرائیل تنازعے کے حل کے لیے متوازن عمل سے گریز کر رہا ہے اور بنیادی مسائل کو حل کیے بغیر معاملات کو اپنے ہاتھ میں لینے کی کوشش کر رہا ہے۔

پوتین نے اسرائیل میں تشدد کو خوفناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ فلسطینی ریاست کے قیام جیسے مسائل کو حل کیے بغیر تنازعہ حل نہیں ہو سکتا۔

روسی صدر نے اس بات پر بھی زور دیا کہ اسرائیل کی آباد کاری کی پالیسی مشرق وسطیٰ میں تشدد کے بھڑکنے کی ایک بڑی وجہ ہے۔

کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نےایک بیان میں کہا ہے کہ روس فلسطین ۔ اسرائیل تنازعہ کے حوالے سے کارروائی کے متوازن اصولوں پر کاربند ہے۔ دونوں فریقوں کے ساتھ بات چیت میں مساوی فاصلہ برقرار رکھتا ہے۔

پیسکوف نے ایک پریس انٹرویو میں کہا کہ ہم دونوں فریقوں کے ساتھ بات چیت جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ ماسکو کے لیے "متوازن نقطہ نظر کو برقرار رکھنا اور تنازع کے دونوں فریقوں کے ساتھ رابطے میں رہنا ضروری ہے"۔

خیال رہےکہ روس کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج وحشیانہ فضائی حملے کررہی ہے جس میں بڑی تعداد میں شہریوں کی اموات ہو رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں