پوپ فرانسس کی ایک بار پھر لڑائی ختم کرنے کی اپیل

غزہ میں مادادی اشیا کی فراہمی اور زخمیوں کے لیے توجہ اور علاج پر بھی زوردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مسیحی پوپ فرانسس نے اتوار کے روز ایک مرتبہ پھر غزہ میں اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان لڑائی ختم کرنے کے مطالبے کا اعادہ کیا ہے۔ وہ ویٹیکن کی پیٹرز سٹریٹ میں جمع ہونے والے ہجوموں سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے اس موقع پر غزہ کے لیے زیادہ سے زیادہ امداد کی فراہمی پر بھی زور دیا۔

پوپ فرانسس نے کہا 'بھائیو! بہت ہو گئی، بہت ہو گئی، بہت ہو گئی' غزہ کے زخمیوں کا بطور خاص ذکر کرتے ہوئے انہوں نے ان کے لیے فوری توجہ اور علاج کا کہا جبکہ شہریوں کے تحفظ کی اپیل کی۔ پوپ نے غزہ میں موجود مغویان کی بھی فوری رہائی پر زور دیا۔

پوپ فرانسس نے اسلحہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا 'اس سے امن قائم کرنے میں مدد نہیں ملے گی بلکہ یہ تصادم کو ہی بڑھائے گا۔ اس لیے تصادم کو بڑھانا نہیں چاہیے۔'

پوپ نے کہا 'اسرائیل اور فلسطینیوں کی اس لڑائی کے سبب جو مصائب میں مبتلا ہیں میں ان اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے بہت قریب ہوں اور ان سب کے لیے دعا کرتا ہوں۔'

ادھر اسرائیل نے غزہ کے بمباری سےتباہ کر دیے گئے اور بجلی و ایندھن کی فراہمی سے محروم کر دیے گئے ہسپتالوں سے بچوں کو کسی بڑے ہسپتال منتقل کرنے کی پیش کش کی ہے۔

واضح رہے غزہ کے جو ہسپتال تباہی سے بچ گئے تھے وہ ادویات اور ایندھن کی عدم فراہمی کے باعث بند ہو چکے ہیں۔ غزہ کے بد ترین محاصرے کے بعد اسرائیلی فوج نے ان ہسپتالوں کو بھی محاصرے میں لیا ہوا ہے جبکہ اوپر سے بمباری بھی جاری ہے۔

فلسطینی وزارت صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ ہسپتالوں کے نزدیک سخت لڑائی جا رہی ہے اور لوگ پھنس کر رہ گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں