ملکہ الزبتھ کاانتقال نیندکی حالت میں ہوا‘:آنجہانی ملکہ کی زندگی کےآخری لمحات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ملکہ الزبتھ کی وفات کو تقریباً ڈیڑھ سال گذرچکے ہیں لیکن ان کے آخری ایام کی تفصیلات ابھی صیغہ راز میں ہیں۔ ان کی زندگی کے آخری لمحات کے واقعات بہت کم سامنے آئے۔ ان کے مداح اب بھی ان کی زندگی کے آخری لمحات کی چھوٹی چھوٹی تفصیلات کو فالو کر رہے ہیں۔

اس حوالے سے ڈیلی میل اخبار نے سابق برطانوی ملکہ الزبتھ دوئم کے پرسنل سیکرٹری ایڈورڈ ینگ کی ایک یادداشت کا حوالہ دیتے ہوئے خبر دی ہے کہ ملکہ کی موت نیند کی حالت میں ہوئی تھی۔

سکاٹش ریکارڈ آفس نے ملکہ الزبتھ دوم کی موت کا سرٹیفکیٹ شائع کیا، جس میں کہا گیا کہ موت کی وجہ بڑھاپا ہے۔

برطانوی اخبار نے ینگ کے نوٹ کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا کہ ملکہ "بہت خاموشی سے انتقال کرگئیں۔ وہ نیند میں چلی گئیں، انہیں اندازہ نہیں ہو رہا تھا کہ وہ بغیر کسی تکلیف کے چلی گئیں"۔

اخبارنے تصدیق کی کہ اس دستاویز کا وجود جو اب شاہی آرکائیوزمیں محفوظ ہے اس لمحے تک معلوم نہیں تھا۔

یہ اخبار شاہی سوانح نگار رابرٹ ہارڈمین کی کتاب "چارلس سوم: دی نیو کنگ۔ دی نیو کورٹ۔ این انسائیڈ لک" پر مبنی ہے جو ابھی تک شائع نہیں ہوئی۔ کتاب میں بتایا گیا ہے کہ بادشاہ چارلس سوم نے اپنی موت سے قبل الزبتھ دوم کے ساتھ اکیلے ایک گھنٹہ گذارا۔ پھر وارث نے کچھ مشروم جمع کرنے اور تازہ ہوا میں سانس لینے کا فیصلہ کیا۔

اخبار نے کتاب کا حوالہ دیا کہ "چارلس کو مورل کیسل واپسی کے دوران اپنے چیف معاون کے فون کال کے ذریعے اس کی موت کی خبر ملی"۔

برطانیہ پر 70 سال سے زائد عرصے تک حکومت کرنے والی ملکہ الزبتھ دوم 8 ستمبر 2022 کو 96 سال کی عمر میں اسکاٹ لینڈ میں انتقال کر گئی تھیں۔ ان کی آخری رسومات 19 ستمبر 2022 کو ویسٹ منسٹر ایبی میں ادا کی گئیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں