سر میں گولی لگنے کے 4 روز بعد تک جشن مناتے نوجوان کی عجیب و غریب کہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک نوجوان چار روز تک سر میں گولی لے کر نہ صرف زندہ رہا بلکہ برازیل کا یہ طالب علم چار دن تک پارٹی کرتا رہا اس بات کا احساس کیے بغیر کہ اسے سر میں گولی لگی ہے، جو اس کے دماغ کو چھو چکی تھی۔

21 سالہ نوجوان میتھیوس فیکیو اپنے دوستوں کے ساتھ ریو ڈی جنیرو کے کابو فریو شہر میں ہجوم کے درمیان نئے سال کا جشن منارہے تھے کہ اچانک انہیں ایک زوردار آواز سنائی دی، جس کے بعد ان کے سر میں شدید درد محسوس ہوا اور خون بہنے لگا۔

میتھیوس فیکیو نے سوچا کہ ان کے سر میں کسی نے پتھر پھینکا اور خون بہنا بند ہونے کے بعد اس بارے میں دھیان نہ دیا۔

اس کے لیے خوش قسمتی سے، ایک ڈاکٹر جائے حادثہ پر موجود تھا اور اس نے برف کی مدد سے زخم سے خون بہنے کو روکنے میں مدد کی۔

اس کے بعد، میتھیوز نے اپنے دوستوں کے ساتھ جشن منایا اور 300 کلومیٹر کا سفر طے کر کے گھر پہنچے۔

گولی کا نشانہ بننے والا نوجوان
گولی کا نشانہ بننے والا نوجوان

4 دن بعد چونکا دینے والا انکشاف

چار دن بعد وہ معمول کے مطابق کام پر گئے اور واپسی کے بعد انہوں نے قیلولہ کیا۔ اس دوران انہیں محسوس ہوا کہ ان کے بائیں بازو میں کچھ تکلیف ہے، اس لیے وہ مقامی نجی اسپتال گئے، جہاں انہوں نے ڈاکٹروں کو پتھر لگنے کے بارے میں بتایا۔

نوجوان کو اس وقت شدید جھٹکا لگا جب سی ٹی اسکین سے پتہ چلا کہ جسے وہ پتھر سمجھ رہے تھے وہ دراصل اس کے سر میں لگی گولی تھی۔

اس کے بعد گولی نکالنے کے لیے دو گھنٹے کا مشکل اور تکلیف دی آپریشن کیا گیا، تاہم وہ معجزانہ طور پر زندہ بچ گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں