ایلون مسک نے ٹیسلا مینجمنٹ کے کچھ ممبروں کےساتھ منشیات کااستعمال کیاتھا: ڈبلیوایس جے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی اخبار ’وال سٹریٹ جرنل‘ نے انکشاف کیا ہے کہ ایلون مسک نے ٹیسلا اور اسپیس ایکس کے کئی موجودہ اور سابق ایگزیکٹوز کے علم میں غیر قانونی منشیات کا استعمال کیا تھا۔

اخبارنے عینی شاہدین کےحوالے سے رپورٹ کیا کہ مسک کے غیر قانونی منشیات کے استعمال کی حد کے بارے میں خدشات ہیں۔ انہوں نے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے کچھ ممبروں کے ساتھ منشیات لی تھیں۔

اخبار نے ’العربیہ بزنس‘ کی طرف سے دیکھی جانے والی ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ بورڈ آف ڈائریکٹرز نے اس معاملے کی تحقیقات نہیں کیں اور نہ ہی کوئی تشویش ظاہر کی ہے۔

ایلون مسک اور اس کے مینیجرز کے درمیان تعلقات کو اس ہفتے ڈیلاویئر کے جج نے سخت تنقید کا نشانہ بنایا، جس نے اپنے فیصلے میں بورڈ کے مفادات کے تصادم کا حوالہ دیا کہ 2018 میں مسک کے 55 بلین ڈالر کے پے پیکج کو "ضرورت سے زیادہ" سمجھا گیا تھا۔

ایلون مسک اور ان کے وکیل ایلکس سپیرو نے کہا کہ ’ڈبلیو ایس جے‘ کی درخواستوں کا جواب نہیں دیا۔ اخبار نے ایک پچھلی رپورٹ میں کہا تھا کہ مسک اکثر نجی پارٹیوں میں ایل ایس ڈی، کوکین، ایکسٹیسی اور سائیکیڈیلک مشروم استعمال کرتے تھے۔

اسپیرو نے وال اسٹریٹ جرنل کو پچھلی رپورٹ میں بتایا تھا کہ مسک کو SpaceX پر باقاعدہ اور بے ترتیب ادویات کے ٹیسٹ کیے گئے اور ان کے تمام ٹیسٹ منفی آئے تھے۔

کچھ دوستوں نے محسوس کیا کہ انہیں مسک کے ساتھ غیر قانونی منشیات لینا پڑیں کیونکہ اس سے وہ پریشان ہو سکتے ہیں۔ اخبار نے ہفتے کے روز لوگوں کا حوالہ دیتے ہوئے رپورٹ کیا۔ دائرے میں رہ کر "سماجی سرمائے" کو کھونے کا خطرہ بھی نہیں لینا چاہتے تھے۔

مسک نے اپنے "ایکس" پلیٹ فارم (سابقہ ٹویٹر) کے ذریعے پچھلے مہینے اپنے مبینہ منشیات کے استعمال کے بارے میں وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ کا جواب دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ "میں جو کچھ بھی کر رہا تھا مجھے ظاہر ہے اسے کرتے رہنا تھا!"۔ یاد رہے کہ Tesla اور SpaceX دنیا کی سب سے قیمتی آٹوموٹو اور ایرو اسپیس کمپنیاں ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ "اگر منشیات واقعی وقت کے ساتھ میری خالص پیداواری صلاحیت کو بہتر بنانے میں مدد کرتی ہیں، تو میں انہیں ضرور لوں گا!"

مقبول خبریں اہم خبریں