بارہ ارب ڈالر کی خرد برد میں ارب پتی خاتون کو سزائے موت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ویتنام کی ایک عدالت نے رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ٹرونگ مائی لین کو 12 ارب ڈالر کے فراڈ کیس میں ملوث ہونے پر اسے موت کی سزا سنائی ہے۔

67 سالہ ارب پتی کی کہانی اس وقت شروع ہوئی جب اسے 2022ء میں گرفتار کیا گیا تھا۔اسے سرکاری اہلکاروں کو رشوت دینے اور بینک قرض دینے کے قوانین کی خلاف ورزی کے الزامات کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق اس کے خلاف دائر کیا گیا مرکزی مقدمہ یہ تھا کہ اس نے فروری 2018ء اور اکتوبر 2022ء کے درمیان سائگن کمرشل بینک سے رقم کا غبن کی تھی۔

ویتنام کے ضابطہ فوجداری کے تحت لین 15 دنوں کے اندر ہو چی منہ شہر میں عدالتی فیصلے کے خلاف اپیل کرسکتی ہیں۔

بیس سال قید کی سزا

ملزمہ کو غبن کے جرم میں موت کی سزا سنائی گئی تھی جب کہ عدالت نے اسے دو دیگر الزامات میں 20 سال قید کی سزا بھی سنائی ہے۔ اس پر بینکنگ قوانین کی خلاف ورزی اور رشوت کی پیشکش کے الزامات ہیں۔

پانچ ہفتوں کے مقدمے کے اختتام پر جیسے ہی فیصلہ پڑھا گیا ویتنامی ارب پتی خاتون ججوں کے سامنے سر جھکا کر کھڑی ہوگئی۔

رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ٹرونگ مائی لین (رائٹرز)
رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ٹرونگ مائی لین (رائٹرز)

عدالت نے ویتنامی خاتون سے تقریباً 674 ٹریلین ڈونگ (27 بلین ڈالر) معاوضہ ادا کرنے کو کہا گیا، جو کہ 12 بلین ڈالر سے دوگنا ہے جس میں اسے سائگون کمرشل بینک کو دھوکہ دینے کی سزا سنائی گئی۔

کیس میں 86 مدعا علیہان

مجموعی طور پر اس کیس میں 86 مدعا علیہان پر مقدمہ چلایا گیا، جن میں لین کے شوہر ہانگ کانگ کے تاجر ایرک چو اور اس کی بھانجی VTP کے سی ای او ٹرونگ ہیو وان شامل ہیں۔

رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ٹرونگ مائی لین (رائٹرز)
رئیل اسٹیٹ ٹائیکون ٹرونگ مائی لین (رائٹرز)

مقامی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ اسٹیٹ بینک کے معائنہ اور نگرانی کے یونٹ کے سابق سربراہ ڈو تھی ہان کو 5.2 ملین ڈالر کی رشوت وصول کرنے کا جرم ثابت ہونے پر عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

سائگون کمرشل بینک کے تین سابق ایگزیکٹوز کو بھی عمر قید کی سزا سنائی گئی۔

شوہر کو 9 سال قید

مقامی میڈیا کے مطابق لین کے شوہر کو بینکنگ قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر نو سال قید کی سزا سنائی گئی۔

جب کہ اس کی بھانجی کو اثاثوں میں غبن کا جرم ثابت ہونے پر 17 سال قید کی سزا سنائی گئی۔

عدالت کے سامنے (رائٹرز)
عدالت کے سامنے (رائٹرز)

یہ بات قابل ذکر ہے کہ کمیونسٹ ویتنام میں سزائے موت غیر معمولی نہیں ہے جہاں قتل، مسلح ڈکیتی، منشیات کی اسمگلنگ اور عصمت دری سمیت 22 جرائم کے لیے سزائے موت دی جاتی ہے، لیکن معاشی جرائم پر اس کا اطلاق بہت کم ہوتا ہے۔

بدعنوانی کے لیے آخری مرتبہ موت کی سزا سنہ2013ء میں دی گئی تھی، جب ویتنام نیشنل شپنگ کمپنی کے دو سابق ایگزیکٹوز کو غبن کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں