اسرائیل کے ساتھ کھڑے ہیں؛ غزہ میں نسل کشی کا ارتکاب نہیں ہو رہا ہے: جو بائیڈن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

امریکی صدر جو بائیڈن نے بین الاقوامی فوجداری عدالت کی طرف سے ابتدائی شواہد ملنے کے بعد وزیر اعظم نیتن یاہو اور وزیر دفاع یوآو گیلنٹ کے لیے گرفتاری کے وارنٹ جاری کرنے پر اسرائیل کا دفاع کیا ہے کہ اسرائیل نسل کشی کے جنگی جرائم میں ملوث نہیں ہے۔

امریکہ کی طرف سے اگرچہ اسرائیل کا یہ دفاع فطری ہے کہ اسرائیل کی تقریباً آٹھ ماہ سے جاری غزہ میں جنگ امریکی اسلحے، فوجی امداد اور سفارتی سہولت کاری کے بغیر ممکن ہی نہیں تھی۔ لیکن اس کے باوجود فوجداری عدالت کے مقابل صدر جو بائیڈن کا اسرائیل کے لیے دفاعی پوزیشن لے کر کھڑے ہو جانا امریکہ سمیت ہر جگہ بہت سے لوگوں کے لیے تشویش کا باعث بن رہا ہے۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا 'جو کچھ اسرائیل غزہ میں کر رہا ہے، وہ نسل کشی نہیں ہے۔ ہم نسل کشی کے الزام کو مسترد کرتے ہیں۔'

خیال رہے امریکی صدر کا اشارہ 35 ہزار سے زائد فلسطینیوں کے غزہ میں مارے جانے کی طرف تھا۔ جن میں دو تہائی کے قریب تعداد خواتین اور بچوں کی ہے۔ اسی کے بارے میں انہوں نے کہا کہ یہ جو کچھ غزہ میں ہو رہا ہے یہ نسل کشی نہیں ہے۔

صدر کا یہ مؤقف وائٹ ہاؤس میں یہودی امریکیوں کے ورثے کا مہینہ منائے جانے کے سلسلے میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سامنے آیا۔

جو بائیڈن کو بہت ساری تقریبات کے دوران امریکہ میں ان دنوں تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ خصوصاً ان امریکیوں، ڈیموکریٹس، سیاہ فام ووٹرز اور عرب امریکیوں کی طرف سے جو غزہ میں جنگ کو روکنے کے حامی ہیں اور جنگ جاری رکھنے کے مخالف ہیں۔ تاہم امریکی صدر اس سلسلے میں تنقید، احتجاجی مظاہروں، دھرنوں اور نعروں کے باوجود اپنے مؤقف پر پوری طرح کھڑے ہیں اور اسرائیل کا ساتھ دے رہے ہیں۔

خطاب کے دوران ان کا کہنا تھا 'ہم اسرائیل کے ساتھ کھڑے ہیں تاکہ حماس اور اس کے لیڈر یحییٰ السنوار کو غزہ سے نکال باہر پھینکیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ اس حماس کی باقیات کو ختم کر دیں اور اسے مکمل شکست دے دیں۔ ہم اسرائیل کے ستھ مل کر یہ کام کر رہے ہیں تاکہ ایسا ہو جائے۔'

یاد رہے کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان مذاکرات تعطل کا شکار ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی یرغمالی آج بھی غزہ میں قید بھگت رہے ہیں۔ مگر جو بائیڈن کا یہ زور دے کر کہنا ہے کہ ہم یرغمالیوں کی رہائی کے مقصد سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ ہم انہیں گھر واپس لانے کے لیے جا رہے ہیں۔ تاکہ ہم انہیں اس ابلتے ہوئے پانی کی دوزخ سے نکال سکیں۔

جو بائیڈن نے ایک روز قبل جس طرح 'مور ہاؤس کالج' میں اپنی تقریر کے دوران فوری جنگ بندی کے بارے میں کچھ کہا تھا۔ یہاں بھی اس نے اپنی تقریر اسی طرح شروع کی۔ انہوں نے بین الاقوامی فوجداری عدالت کی طرف سے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو اور اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلنٹ کے گرفتاری وارنٹ جاری کرنے کو مسترد کر دیا۔

فوجداری عدالت کی طرف سے ان وارنٹس کے اجراء کی اطلاع پیر کے روز فوجداری عدالت کے پراسیکیوٹر کریم خان نے ہیگ میں اپنی گفتگو کے دوران دی تھی۔ جس کے بعد اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو پوری دنیا کے میڈیا کی شہ سرخیوں کا حصہ بنے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں