برطانوی رائل ائیر فورس کا طیارہ تباہ ، پائلٹ ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانیہ کی رائل ائیر فورس کا طیارہ گر کر تباہ اور اس کا پائلٹ ہلاک ہو گیا ہے۔ برطانوی رائل فورس نے ہلاک ہونے والے پائلٹ کا نام فی الحال ظاہر نہیں کیا ہے۔ تاہم اس کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ طیارے کو تباہی سے لگنے والی آگ پائلٹ کے لیے جان لیوا ثابت ہوئی۔

برطانوی طیارہ دوسری جنگ عظیم کی یادگار تھا ۔ اس کے تباہ ہونے کا واقعہ ہفتے کی دوپہر ایک بجے لنکن شائر میں پیش آیا ہے۔ طیارہ کریش ہونے کی اطلاع کے فوری بعد سیکیورٹی سے متعلق ادارے ، پولیس اور ایمر جنسی سے نمٹنے والے ادارے متحرک ہو گئے اور موقعہ پر پہنچ گیا، جہاں طیارہ ایک میدان میں گرا ہوا تھا۔جبکہ اس کا پائلٹ ہلاک ہو چکا تھا۔

سیکیورٹی اداروں نے ابھی تک اس ہلاک ہونے والے پائلٹ کا نام نہیں ظاہر کیا ہے۔ تاہم اتنا بتایا ہے کہ یہ مرد پائلٹ تھا۔ برطانوی وزارت دفاع کے ایک ترجمان نے اس واقعے کو انتہائی افسوسناک قرار دیتے ہوئے اس کا اعلان کیا اور بتایا پائلٹ کی ہلاکت ہو گئی ہے۔

برطانوی وزارت دفاع کے ترجمان نے کہا ہم اس مشکل وقت میں پائلٹ کے احترام میں ان کی راز داری کا خیال رکھیں گے۔۔ واضح رہے امریکہ اور یورپی ملکوں یہ روایت بڑی پختہ ہے کہ وہ جس طرح کی قیاس آرائیاں کسی دوسرے بر اعظم یا نسل ، رنگ اور مذہب کے لوگوں کے ساتھ پیش آنے والے واقعے کے بعد کرتے ہیں اپنے لوگوں کے ساتھ اس کے بالکل بر عکس ان کا رویہ احترام پر مبنی ہوتا ہے۔ اپنے مرنے والوں کی نجی زندگی کا اور اہل خانہ یا رشتہ داریوں کو بھی عام طور پر اس کے خاندان کی مرضی کے بغیر سامنے نہیں لایا جاتا ہے۔

برطانوی پولیس نے اس بارے میں اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ طیارے کی تباہی کے واقعے کی تحقیقات کی جاری ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ یہ ایک ہی طیارہ تھا جو واقعے میں تباہ ہوا ہے اور طیارے پر ایک ہی پائلٹ موجود تھا۔ پولیس نے پائلٹ کے خاندان اور پیاروں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا ہے۔

برطانوی اپوزیشن کے رہنما کئیرسٹارمر نے کہا ہے وہ اس افسوسناک واقعے پر غمزدہ ہیں۔ خیال رہے برطانوی رائل فورس کے پرانے اور جنگوں کی یاد گار کے طور پر بمبار طیاروں کو محفوظ رکھا گیا ہے اور انہیں بعض ائیر شوز میں نمائشی مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ ان میں سے بس چند ایک اڑنے کی پوزیشن میں رہ ہیں گئے باقی سب مستقل گراؤنڈ کیے جا چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں