امریکی صدر جوبائیڈن کو 85 ہزار ڈالر تنخواہ پر ’میمز‘ ڈائریکٹر کی تلاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

’میمز‘ کے بارے میں دو عالمگیر سچائیاں ہیں۔ پہلی جب کمپنیوں نے انہیں استعمال کرنا شروع کیا تو وہ اپنے عروج کو پہنچیں۔ دوسرا سیاست کی دنیا میں ان کا استعمال ہے جو کہ ایک مشکل کام ہے۔

اس تناظر میں امریکہ میں ڈیموکریٹس اور ریپبلکنز نے یکساں طور پر انٹرنیٹ پر مزاحیہ مواد فراہم کرنے کی کوشش کی لیکن وہ مایوس اور ناکام رہے۔

نوجوانوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کوشش

صدر جو بائیڈن کی مہم جس نے اب تک کافی مضبوط آن لائن موجودگی یقینی بنائی ہے اور وہ اسے مزید آگے لے جانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بائیڈن مہم کے لیے نوکریوں کی ایک حالیہ فہرست میں انکشاف ہوا ہے کہ وہ نوجوانوں کو راغب کرنے کے لیے بہترین آن لائن مواد اور میمز پیجز کو شامل کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ انہیں ایک ایسے شخص کی تلاش ہے جو روزانہ کی بنیاد پربائیڈن کی صدارتی مہم کے لیے ’میمز‘ تیار کرے۔ صدر اس کام کے عوض اسے سالانہ 85,000 ڈالر کی تنخواہ دینےکو تیار ہیں۔

بائیڈن کے اٹلانٹس کے دورے سے
بائیڈن کے اٹلانٹس کے دورے سے

’این بی سی‘ کی ویب سائٹ کے مطابق ملازمت کی تفصیل میں نامزد ملازم کو انٹرنیٹ پر بہترین مواد اور میم پیجز کا روزانہ کی بنیاد پر کام کرنا ہوگا۔

سیاسی مواد فراہم کرنا

اس کردار کے لیے مثالی امیدوار کے پاس سیاسی مواد کو ووٹرز تک پہنچانے کا جوش بھی ہونا چاہیے اور وہ آن لائن پلیٹ فارم پر سیاسی مواد شائع کرنے کی پوری صلاحیت رکھتا ہو۔

نیا ملازم ڈیلاویئر میں مہم کے ہیڈکوارٹر میں کام کرے گا۔ بہترین ڈیجیٹل میڈیا کمپنیوں، پوڈ کاسٹرز اور متعدد سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر میم پیجز کے ساتھ تعلقات استوار اور منظم کرے گا۔

بائیڈن نے نوجوان امریکیوں کو اپنی طرف متوجہ کرنے کی اپنی حکمت عملی کے ایک حصے کے طور پر مواد کے تخلیق کاروں کے ساتھ طویل عرصے سے شراکت داری شروع کی ہے۔

تخلیق کاروں کی بھرتی

جو بائیڈن کی انتظامیہ نے اپنی پالیسی کے فوائد کو مستحکم کرنے اور خارجہ امور کے بارے میں معلومات پھیلانے کے لیے تخلیق کاروں کو بھرتی کیا۔

ان کی صدارتی مہم نے اپنے پلیٹ فارم کو فروغ دینے میں مدد کے لیے سوشل میڈیا پر اثر انداز ہونے والوں پر بھی انحصار کیا۔

اب تک مہم سے وابستہ سب سے مشہور میم "ڈارک برینڈن" ہے۔ جسے بائیڈن کیمپ نے دائیں بازو کے انٹرنیٹ حلقوں سے ترقی پسندوں کے کامیابی کے ساتھ شکار کرنے کے بعد قبول کیا۔

سب سے حالیہ وائرل میمز میں سے ایک اکثر سیاسی تناظر سے باہر استعمال ہوتی تھی۔ ایسی ہی ایک ’میم‘ نائب صدر کملا ہیرس کے ایک جملے "کیا آپ کو لگتا ہے کہ آپ ابھی ناریل کے درخت سے گرے ہیں؟" سے تیارکی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں