پیرس: سینکڑوں شہری نیتن یاہو کے انٹرویو پر احتجاج کے لیے سڑکوں پر نکل آئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

فرانس کے دارالحکومت پیرس میں جمعرات کے روز مظاہرین کی بڑی تعداد سڑکوں پر نکلی تاکہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کے تازہ نشر کیے گئے انترویو کے خلاف احتجاج کر سکے۔ فرانس کے ایک ٹی وی چینل نے یاہو کا انٹرویو غزہ میں جاری اسرائیلی جنگ کے بارے میں نشر کیا تھا۔

انٹرویو کے نشر کیے جانے کے بعد سینکڑوں شہری فلسطینی شناخت بن چکے کوفیے کو گلوں میں حمائل کیے اور ہاتھوں میں فلسطینی پرچم تھامے ہوئے پر امن انداز میں ٹی وی سٹیشن کے باہر جمع ہو گئے۔ ٹی وی سٹیشن ' ٹی ایف 1 پیرس شہر کے مغرب میں مضافاتی علاقے میں قائم ہے۔

پولیس نے مظاہرین کو ٹی وی سٹیشن کی عمارت سے دور رکھنے کے لیے بھاری نفری تعینات کی تھی۔ مظاہرین پیرس کے شہریوں کی طرف سے غزہ کے جنگ زدہ اور تباہ حال فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے نعرے لگا رہے تھے کہ ' غزہ ! پیرس تمہارے ساتھ ہے۔'

مظاہرین کے نعروں میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ اور اسرائیل قاتل ہے کے نعرے بھی شامل تھے۔ پیرس کے شہریوں نے نیتن یاہو کے انٹرویو میں غزہ پر اسرائیلی جنگ کو دفاعی جنگ بنا کر پیش کرنے کی یاہو کی کوشش کو اپنے سڑکوں پر نکل کر احتجاج کرکے مسترد کر دیا ۔ خیال رہے سات اکتوبر سے غزہ میں جاری اسرائیلی جنگ میں اب تک غزہ کے 36224 سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں زیادہ تعداد فلسطینی بچوں اور عورتوں کی ہے۔

نیتن یاہو نے اپنے انٹرویو میں کہا ' غزہ میں شہری ہلاکتوں کی تعداد کسی بھی شہر میں ہونے والی جنگ میں سب سے کم ہے۔ جسے فرانس کے شہریوں نے مسترد کیا اور جھوٹ قرار دیتے ہوئے پیرس کی سڑکوں پر ٹی وی سٹیشن کے سامنے احتجاج کرنے پہنچ گئے۔ نیتن یاہو کا نام بین الاقوامی فوجداری عدالت کی طرف سے جنگی جرائم میں مبینہ ملوث افراد میں شامل ہونے کے بعد فرانس میں پہلا اہم انٹرویو دکھایا گیا ہے۔

نیتن یاہو نے غزہ میں خوراک کی قلت اور اقوام متحدہ کے اداروں کی طرف سے قحط کی صورت حال کے بارے میں رپورٹس کو بھی ماننے سے انکار کرتے ہوئے کہا ایسی صورت حال نہیں جسے قحط کہا جا سکے۔

ابھی جمعرات کے روز ہی اقوام متحدہ کے ادارے ' اونروا ' نے رپورٹ دی ہے کہ غزہ میں امدادی سامان اور خوارک کی فراہمی میں ماہ مئی کے دوران دوتہائی کمی ہو چکی ہے۔ چھ مئی سے پہلے 176 ٹرک خوراک اور امدادی سامان کے ساتھ غزہ پہنچ رہے تھے، اب سات مئی سے یہ تعداد 55 ٹرکوں تک رہ گئی ہے، جبکہ یومیہ ضرورت 500 ٹرکوں کی ہے۔

یہ کمی رفح پر اسرائیلی حملے کے بعد مزید بڑھ گئی ہے، جہاں پچھلے اتوار کو اسرائیل نے پناہ لیے ہوئے بے گھر فلسطینیوں پر بمباری کر کے 45 سے زائد کو ہلاک اور 250 کو زخمی کر دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں