.

شام: اسلحہ ڈپو میں دھماکا، کم سے کم 40 افراد ہلاک

حمص میں دھماکے سے بڑے پیمانے پر تباہی، 120 افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے وسطی شہر حمص میں سرکاری فوج کے ایک اسلحہ ڈپو میں دھماکے کے نتیجے میں کم سے کم چالیس افراد ہلاک اور ایک سو بیس زخمی ہوگئے ہیں۔

لندن میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کی اطلاع کے مطابق حمص کے علاقے وادی الذہاب میں سرکاری فوج کے ڈپو میں ایک راکٹ گرنے کے بعد دھماکا ہوا ہے اور یہ راکٹ ممکنہ طور پر باغی جنگجوؤں نے فائر کیا تھا۔

آبزرویٹری نے پہلے ہلاکتوں کی تعداد بائیس بتائی تھی۔ مرنے والوں اور زخمیوں میں عام شہری اور فوجی شامل ہیں۔زخمیوں میں بیشتر کی حالت تشویش ناک بتائی گئی ہے۔

اس این جی او کا کہنا ہے کہ اسلحہ ڈپو حکومت نواز ملیشیا کے زیراستعمال تھا۔ایسوسی ایٹڈ پریس نے اطلاع دی ہے کہ دھماکے کے نتیجے میں علاقے میں بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے۔

حمص میں یہ دھماکا ایسے وقت میں ہوا ہے جب صدر بشارالاسد دارالحکومت دمشق کے نواح میں باغیوں کے ایک سابقہ مضبوط گڑھ میں اپنے وفادار فوجیوں کے درمیان اچانک نمودار ہوئے ہیں اور انھوں نے شامی فوج کے قومی دن کے موقع پر بیان میں کہا ہے کہ وہ باغیوں کے مقابلے میں جنگ جیت رہے ہیں۔