.

"میرے والد نے استعفی کے بدلے فوجی مراعات ٹھکرائیں"

مصر کے معزول صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی بیٹی کا فیس بک بیان میں انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے معزول صدر ڈاکٹر محمد مرسی کی صاحبزادی الشیماء نے کہا ہے کہ ان کے والد نے اس وقت کے وزیر دفاع اور سابق آرمی چیف فیلڈ مارشل عبدالفتاح الیسیسی اور فوجی قیادت کی جانب سے صدارت سے استعفی کے بدلے من پسند ملک میں سیاسی پناہ سمیت من چاہے انعام اور اکرام کی پیشکش کی تھی جسے میرے والد نے انتہائی جرات سے ٹھکرا دیا تھا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر تبصرہ کرتے ہوئے الشیماء مرسی کا کہنا تھا کہ دنیا کو معلوم ہونا چاہئے کہ مصری فوج نے ان کے والد کو اپنی پسند کے ملک میں پناہ کی پیشکش کی لیکن ان کے والد اس پیشکش کی قبولیت کو اللہ، ملک اور مصری عوام کی جانب سے سونپے گئے اقتدار کی خلاف ورزی سمجھتے تھے۔

مئی کے آخری ہفتے میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں سابق وزیر دفاع امیدوار ہیں اور انہوں نے دو مصری نیوز چینلز کو مشترکہ انٹرویو دیتے ہوئے بتایا تھا کہ وہ نصر شہر کے کنونشن سینٹر میں معزول صدر محمد مرسی کی آخری تقریر کے موقع پر خود دیگر فوجی قیادت کے ہمراہ موجود تھے، تاہم انہیں لگا کہ صدر مرسی صرف اپنے حامیوں سے مخاطب رہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہم کنونشن سینٹر میں موجود فوجی قیادت کی حفاظت کا خصوصی سیکیورٹی پلان تیار کر رکھا تھا۔