.

عراق: اہل سنُت کی مسجد پر حملہ، 70 نمازی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے صوبے دیالا میں اہل سُنت کی ایک مسجد پر شیعہ ملیشیا کے حملے میں ستر افراد جاں بحق اور دسیوں زخمی ہو گئے ہیں۔

عراق کے ایک فوجی افسر اور ایک پولیس افسر نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ شیعہ ملیشیا نے بغداد سے شمال مشرق میں واقع صوبہ دیالا کے گاؤں امام ویس میں مسجد مصعب بن عمیر پر نماز جمعہ کے وقت حملہ کیا ہے۔ پہلے ان کے ایک بمبار نے مسجد کے بیرونی دروازے پر خود کو دھماکے سے اڑا دیا اور اس کے بعد مسلح حملہ آوروں نے مسجد کے اندر گھس کر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی۔

دو میڈیکل افسروں نے حملے میں ستر افراد کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔ تاہم انھوں نے زخمیوں کی حتمی تعداد کے بارے میں کچھ نہیں بتایا ہے۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ شیعہ جنگجوؤں کے حملے میں مرنے والوں کی تعداد اس سے کہیں زیادہ ہے لیکن اس اطلاع کی فوری طور پر تصدیق ممکن نہیں۔

عراقی حکام کا کہناہے کہ دولت اسلامی عراق وشام (داعش) سے تعلق رکھنے والے جنگجوؤں نے اس علاقے میں آباد دومقامی قبائل آل ویس اور الجبور کو اپنے ساتھ ملنے پر آمادہ کرنے کی کوشش کی ہے مگر ان دونوں قبیلوں نے اب تک داعش کے ساتھ شامل ہونے سے انکار کیا ہے۔

واضح رہے کہ دولت اسلامی کے جنگجوؤں نے حال ہی میں دیالا کے دو قصبوں جلولہ اور السعدیہ پر قبضہ کر لیا تھا۔تاہم شیعہ ملیشیا کے حملے کا نشانہ بننے والے گاؤں امام ویس پر ابھی تک حکومت کا ہی کنٹرول ہے۔