مصر نے رفح بارڈر کراسنگ عارضی طور پر کھول دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصری حکام نے غزہ کی پٹی کے ساتھ واقع رفح بارڈر کراسنگ کو عارضی طور پر کھول دیا ہے تاکہ مصری علاقے میں پھنسے ہوئے فلسطینی اپنے گھروں کو لوٹ سکیں۔

مصر نے 24 اکتوبر کو سرحدی قصبے رفح کے نزدیک فوجیوں پر تباہ کن حملے کے بعد بارڈر کراسنگ کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کردیا تھا۔اس حملے میں اکتیس مصری فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔

اس حملے کے بعد مصر نے شمالی سیناء میں تین ماہ کے لیے ہنگامی حالت نافذ کردی تھی اور شام سے صبح تک کرفیو نافذ کررکھا ہے۔اس دوران مصری فورسز رفح کے نزدیک غزہ اور شمالی سیناء کے درمیان پانچ سو میٹر سے ایک کلومیٹر تک بفر زون کے قیام کے لیے اقدامات کررہی ہیں اور سرحد پر واقع مکانات کو مسمار کیا جارہا ہے اور غزہ کی جانب جانے والی زیرزمین سرنگوں کو بھی ختم کیا جارہا ہے۔

رفح پر غزہ کی جانب کراسنگ پوائنٹ کے ڈائریکٹر ماہر ابو صبحا نے کہا ہے کہ سرحدی گذرگاہ صرف بدھ اور جمعرات کے لیے کھولی گئی ہے اور مصری علاقے سے لوگوں کو غزہ میں داخلے کی اجازت دی گئی ہے۔انھوں نے مصری حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ سرحدی گذرگاہ کو دوطرفہ آمدورفت کے لیے کھولا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں