.

غزہ: اسرائیل کے لیے جاسوسی پر 4 افراد کو موت کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ کی پٹی میں اسلامی تحریک مزاحمت (حماس) کے تحت ایک فوجی عدالت نے بدھ کے روز چار فلسطینیوں کو اسرائیل کے لیے جاسوسی کے جُرم میں قصور وار قرار دے کر سزائے موت کا حکم دیا ہے۔

عدالت نے ایک مختصر بیان میں بتایا ہے کہ غزہ شہر کے جنوبی علاقے زیتون سے تعلق رکھنے والے ایک 23 سالہ نوجوان کو جاسوسی کے الزامات میں قصور وار قرار دے کر موت کی سزا دی گئی ہے۔عدالت نے اس کا نام ظاہر نہیں کیا ہے۔

بیان کے مطابق جاسوسی کے مقدمے میں ماخوذ تین اور افراد مفرور ہیں اور عدالت نے انھیں ان کی عدم موجودگی میں قصور وار قرار دے کر سزائے موت سنائی ہے۔

ایک عدالتی ذریعے نے فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ ان چاروں افراد پر (اسرائیلی) قبضے کے لیے جاسوسی کے الزامات میں فرد جرم عاید کی گئی تھی۔انھوں نے کاروں اور مکانوں کے بارے میں اسرائیل کو معلومات فراہم کی تھیں،جن کی مدد سے اس کو حماس کے کارکنان کو میزائل حملوں میں ٹھیک ٹھیک نشانہ بنانے میں مدد ملی تھی۔

واضح رہے کہ اسرائیل کے مقبوضہ علاقوں میں سنہ 1994ء میں فلسطینی اتھارٹی کا قیام عمل میں آیا تھا۔اس کے بعد سے فلسطینی مرکز برائے انسانی حقوق کے مطابق عدالت کے اس فیصلے سے قبل غزہ کی پٹی اور مغربی کنارے میں ایک سو سڑسٹھ افراد کو موت کا حکم سنایا جاچکا ہے۔

حماس نے سنہ 2007ء سے غزہ کی پٹی میں اپنی عمل داری قائم کررکھی ہے اوراس کے تحت سکیورٹی فورسز نے صدر محمود عباس کی جماعت فتح کے تحت سکیورٹی فورسز اور فلسطینی اتھارٹی کے عہدے داروں کو نکال باہر کیا تھا۔غزہ میں حماس کی حکومت کے بعد سے آٹھ افراد کو سزائے موت دی جاچکی ہے۔

فلسطینی قانون کے تحت سزائے موت کے ہرحکم پر صدر محمود عباس کی توثیق کے بعد عمل درآمد کیا جانا چاہیے مگر غزہ میں حماس ان کی عمل داری کو تسلیم ہی نہیں کرتی ہے اور ان کی حکومت صرف غرب اردن کے علاقوں ہیں میں قائم ہے۔

غزہ میں عدالت کی جانب سے موت کی سزائیں سنانے کے علاوہ حماس کے تحت سکیورٹی فورسز بھی سمری ٹرائل کے بعد اسرائیل کے لیے جاسوسی کے مجرموں کو سزائے موت سنا دیتی ہیں اور ان جاسوسوں کو بعض اوقات سرعام گولیاں مار کرہلاک کیا جاتا ہے۔فلسطینی قانون کے تحت اسرائیل یا کسی دوسرے ملک کے لیے جاسوسی، قتل اور منشیات کی اسمگلنگ کے جرائم کی سزا موت ہے۔ان مجرموں کو پھانسی دی جاتی ہے یا پھر گولیاں مار کر موت کی نیند سلا دیا جاتا ہے۔