عراق : 4 سینئر کمانڈروں سمیت داعش کے 65 ارکان ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں انٹیلجنس سیل اور مشترکہ آپریشنز کی کمان کے درمیان تعاون سے فضائیہ کے آپریشن دوران الرطبہ کے علاقے میں داعش تنظیم کے 10 ٹھکانوں کو تباہ کردیا گیا۔ کارروائی میں 65 دہشت گرد مارے گئے جن میں تنظیم کے 4 بڑے لیڈر بھی شامل ہیں۔

"مشترکہ آپریشنز کی کمان" کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ یہ ہلاکتیں مختلف مقامات پر کی جانے والی کارروائیوں کے دوران ہوئیں۔ اس دوران داعش کے ٹھکانوں کے علاوہ شام سے الرطبہ آنے والے خودکش حملہ آوروں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ عراقی فضائیہ کے ایف سولہ طیاروں نے داعش تنظیم کی قیادت کے ایک اجلاس کے مقام کے علاوہ تنظیم کے تین ایسے ٹھکانوں کو بھی بمباری سے تباہ کردیا جنہیں داعش کار بم دھماکوں کے لیے گاڑیوں کی تیاری اور ہتھیاروں کو ذخیرہ کرنے کے لیے استعمال کرتی تھی۔ مزید برآں بمباری کے نتیجے میں ایک ٹھکانے میں موجود بھاری مالی رقوم اور کرنسی نوٹوں میں آگ بھڑک اٹھی۔

بیان کے مطابق بمباری سے ہلاک اہم شخصیات میں جنوبی ریجن کا ذمہ دار شيخ جمال ابو عبدالعزيز، شام اور عراق میں دہشت گرد کارروائیوں کا ایک اہم کوآرڈی نیٹر ابو قسورہ، الرقہ میں داعش کی قیادت کے ساتھ انٹیلجنس کے امور کا کوآرڈی نیٹر اور سابق افسر ابو ذر العراقی اور جنوبی ریجن میں دھماکا خیز مواد سے بھری گاڑیوں کا ذمہ دار ابو حفص الانصاری شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں