.

فلوجہ آپریشن: فوج الصقلاویہ میں داخل، ہزاروں افراد کی نقل مکانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کی الانبار گورنری کے مرکزی شہر اور داعش کے گڑھ فلوجہ میں عراقی فوج کا آپریشن جاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق عراقی فوج اور اس کی حامی حشد الشعبی شیعہ ملیشیا نے ہفتے کے روز فلوجہ شہر سے 10 کلو میٹر دور شہر کے شمال مغرب میں واقع الصقلاویہ مرکز میں داخل ہو کر وہاں عراقی پرچم لہرا دیا۔

عراق کے سیکیورٹی ذرائع کےمطابق فوج تیزی کے ساتھ پیش قدمی کر رہی ہے۔ ہفتے کے روز فوج اور شیعہ ملیشیا کی کارروائیوں میں داعشی جنگجو الصقلاویہ سے فرار ہو گئے جس کے بعد فوج نے اہم مراکز کا کنٹرول سنھبال لیا ہے مگر یہ شہر ابھی تک مکمل طور پر فوج کے کنٹرول میں نہیں آ سکا ہے۔

فلوجہ آپریشن کنٹرول روم کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ الصقلاویہ میں فوج کے بریگیڈ 14 کے فوجیوں اور حشدالشعبی کے جنگجوؤں نے مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے دشمن کو بھاری جانی نقصان سے دوچار کرتے ہوئے اسے الصقلاویہ سے بے دخل کر دیا۔

آپریشن کنٹرول روم کے مطابق اتحادی ممالک کے طیاروں نے دریائے فرات میں داعش کی ایک کشتی کو فضائی حملوں میں نشانہ بناتے ہوئے تباہ کر دیا ہے جس کے نتیجے میں کشتی میں سوار تمام جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔ جنگجو کشتی پر سوار ہو کر دریائے فرات کے راستے فرار کی کوشش کر رہے تھے۔ الصقلاویہ پر قبضے کے باوجود عراقی فوج فلوجہ شہر سے 10 کلومیٹر کی دوری پر ہے۔ عراقی فوج کو ابھی داعش سے نمٹنے میں کافی وقت لگ سکتا ہے، تاہم الصقلاویہ پرقبضے سے داعش کی موصل، صحرائے الانبار اور الشرقاط کی طرف سے ملنے والی سپلائی لائن کٹ گئی ہے۔

فلوجہ سے 10 ہزار افراد کی نقل مکانی

عراق میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ادارے’ہلال احمر‘ کا کہنا ہے کہ فلوجہ شہر میں داعش کے خلاف ایک ہفتے سے جاری آپریشن کے دوران اب تک 10 ہزار افراد گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں۔ آئندہ ایام میں مزید ہزاروں افراد کی نقل مکانی کا خدشہ ہے۔

ہلال احمر کا کہنا ہے کہ صرف جمعہ کے روز 4200 افراد پناہ گزینوں کے لیے قائم کردہ کیمپوں میں پہنچے، جہاں انہیں طبی امداد کے ساتھ ساتھ کھانے پینے کی اشیاء بھی تقسیم کی گئیں۔

الانبار گورنری کی مقامی کونسل کا کہنا ہے کہ فلوجہ سے ایک ہزار خاندان جن کی اکثریت بچوں اور خواتین پر مشتمل ہے الصقلاویہ سے نقل مکانی کر کے محفوظ مقامات پرمنتقل ہوئے ہیں۔ کونسل کے رکن راجع برکات العیساوی نے عالمی برادری اور امداد فراہم کرنے والے اداروں سے فلوجہ جنگ سے متاثرہ شہریوں کی مالی امداد کے لیے فوری اقدامات کامطالبہ کیا۔