.

یمنی فوج کی صنعاء کے ہوائی اڈے کے اطراف بم باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج روز بروز دارالحکومت صنعاء پر کنٹرول حاصل کرنے کے نزدیک آ رہی ہے۔ اس وقت یمنی فوج نہم ضلع میں لڑائی میں مصروف ہے جس کے بعد ارحب ضلع پر حملہ کیا جائے گا۔ العربیہ نیوز چینل کے مطابق اتوار کے روز یمنی فوج نے صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے اطراف میں باغیوں کے عسکری ٹھکانوں کو توپوں سے نشانہ بنایا۔

ادھر المخا میں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے شہر کے اطراف پیش قدمی جاری رکھی جب کہ المخا اور الحدیدہ کے درمیان مرکزی شاہراہ کی بھی ناکہ بندی کر دی گئی ہے تاکہ باغیوں کے لیے آنے والی امداد اور کمک کو روکا جا سکے۔

یمنی فوج کے یونٹوں اور عوامی مزاحمت کاروں نے عرب اتحادی طیاروں کی معاونت سے الکدحہ اور واحجہ کے درمیان واقع علاقے ابورزیق کی جانب پیش قدمی کی جو المخا شہر سے 5 کلومیٹر کی دوری پر ہے۔

اس کے علاوہ المخا شہر کے اطراف کو عبور کرنے والی یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی بقیہ باغیوں کے ساتھ سڑکوں پر دوبدو جنگ جاری ہے۔

اس سے قبل المخا کی بندرگاہ کو آزاد کرانے کے لیے آپریشن کا آغاز کیا گیا جو ملک کی تیسری بڑی اقتصادی بندرگاہ ہے۔ دوسری جانب سرکاری فوج کے یونٹوں نے صنعاء کے مشرق میں واقع علاقے نہم میں نئے ٹھکانوں پر کنٹرول حاصل کر لیا۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ حوثی ملیشیاؤں نے دارالحکومت صنعاء میں رائے عامہ کی بیداری کے واسطے مساجد کے لاؤڈ اسپیکروں اور رہائشی علاقوں میں اعلانات کا سہارا لیا ہے۔ اس کا مقصد لڑائی کے محاذوں پر باغی ملیشیاؤں کو تقویت پہنچانے کے لیے نئے جنگجوؤں کو بھرتی کرنا ہے۔ ان محاذوں پر گزشتہ ہفتوں کے دوران حوثی ملیشیاؤں کو بڑے پیمانے پر جانی نقصانات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔