.

سلامتی کونسل میں یمن کا خط ..ایران کا ملیشیاؤں کو ہتھیار مہیا کرنا ثابت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی حکومت نے ہفتے کے روز سرکاری طور پر عالمی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا ہے کہ حوثی باغیوں کو یمن اور بحر احمر میں ان کی دہشت گرد کارروائیوں کی بنیاد پر ایک دہشت گرد جماعت قرار دیا جائے۔

یہ مطالبہ ایک سرکاری شکایتی خط میں سامنے آیا ہے جس میں یمن میں ایرانی مداخلت ، تہران کی جانب سے ملیشیاؤں کو اسلحے کی فراہمی اور ملک میں جنگ پر اکسانے کا سلسلہ جاری رکھنے کو ثابت کیا گیا ہے۔

یہ خط اقوام متحدہ میں یمن کے مندوب خالد الیمانی نے ہفتے کے روز اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل آنتونیو گوترس کے حوالے کیا۔

اس کے علاوہ خط میں یمنی خود مختاری کے خلاف ایران کی خلاف ورزیوں کی تفصیلات بھی شامل ہیں۔ ان میں ملیشیاؤں کے لیے مسلسل طور ہتھیاروں کا بھیجا جانا اور مختلف نوعیت کی مالی اور لوجسٹک سپورٹ کا پیش کیا جانا اہم ترین ہے۔ ان کے علاوہ کچھ عرصہ قبل حوثی ملیشیاؤں کی جانب سے بحر احمر میں شہری اور عسکری بحری جہازوں پر حملوں اور بحر احمر کے جنوب میں بین الاقوامی جہاز رانی کے امن و سلامتی کے لیے خطرے کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔