.

سعودی سرحد پر حوثی باغیوں کی دراندازی کی کوشش پسپا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی افواج نے اتوار کی صبح عید الفطر کے پہلے روز جازان اور نجران کے علاقوں کے مقابل حوثی ملیشیاؤں اور معزول صدر صالح کی پاسداران فورس کی جانب سے حملوں کو ناکام بنا دیا۔

"العربیہ" کے نمائندے کے مطابق بیک وقت ہونے والے حملوں کا آغاز جازان کے علاقے میں واقع القرن گاؤں میں سعودی نگرانی مراکز کی جانب کیٹوشا راکٹوں کے داغے جانے سے ہوا۔ اس کے ساتھ ہی جنراج کے علاقے میں بھی سعودی مرکز کو نشانہ بنایا گیا۔ ان کارروائیوں کا مقصد باغی ملیشیاؤں کو سعودی سرحد کی جانب پیش قدمی اور مملکت میں دراندازی کے واسطے محفوظ راستہ فراہم کرنا تھا۔

تاہم سعودی افواج نے فوری طور پر حرکت میں آ کر یمنی سرحد کے اندر تعینات حوثی عناصر کو توپوں کے ذریعے تقریبا 25 کلومیٹر کے فاصلے پر نشانہ بنایا جب کہ سعودی سرحد پر دراندازی کی کوشش کرنے والوں پر براہ راست اور بھاری ہتھایروں کے ذریعے حملہ کیا گیا۔

اس دوران عرب اتحاد کے جنگی طیاروں نے اس عکسری کارروائی میں معاونت کرتے ہوئے حوثی باغیوں کو سعودی سرحد تک لے جانے والی کئی گاڑیوں کو تباہ کر ڈالا۔
عسکری ذرائع کے مطابق کارروائی میں حوثیوں کا ایک کمانڈر اور درجنوں جنگجو مارے گئے۔