.

عراق : بین الاقوامی اتحاد نے "نئی داعش" سے خبردار کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے زیر قیادت بین الاقوامی اتحاد نے خبردار کیا ہے کہ اگر عراقی حکومت نے سنیوں کے ساتھ اپنے معاملے اور برتاؤ کو تبدیل نہ کیا تو عراق میں ایک نئی داعش نمودار ہو سکتی ہے۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا ہے کہ موصل میں فتح کے اعلان کے باوجود داعش تنظیم کے خلاف جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی۔

بین الاقوامی اتحاد کی افواج کے کمانڈر جنرل اسٹیوٹ تاوسنڈ نے عراقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ اگر وہ کسی "دوسری" داعش کے ظہور کو روکنا چاہتی ہے تو اسے نئے کام کرنا ہوں گے۔ امریکی جنرل نے اس امر کی ضرورت پر زور دیا کہ عراقی حکومت ملک میں سنی حلقوں کے ساتھ رابطے میں رہے اور ان کے ساتھ مصالحت کو یقینی بنائے۔

یاد رہے کہ عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی نے آزاد کرائے جانے والے شہر موصل میں 9 ماہ تک فوجی آپریشن جاری رہنے کے بعد اتوار کے روز "بڑی کامیابی" حاصل کر لینے کا اعلان کیا تھا۔

دوسری جانب بین الاقوامی اتحاد میں شامل ممالک آج سے تین روز تک واشنگٹن میں جاری رہنے والی ملاقاتوں میں داعش تنظیم کے خلاف کامیابیوں کو یقینی بنانے کے طریقہ کار کو زیر بحث لائیں گے۔ امریکی وزارت خارجہ کے مطابق ان اجلاسوں میں مختلف سطحوں پر داعش کے خلاف مہم کو بڑھانے کے طریقہ کار پر بھی بات چیت ہو گی۔