.

فلسطینی اتھارٹی کی "انٹرپول" میں شمولیت رکوانے کے لیے اسرائیل مُتحرّک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی حکومت وزیراعظم بنیامین نیتنیاہو کے براہ راست احکامات کی بنیاد پر فلسطینی اتھارٹی کی انٹرپول تنظیم میں شمولیت روکنے کے لیے کام کر رہی ہے۔ توقع ہے کہ رواں ہفتے بیجنگ میں منعقد ہونے والی انٹرپول کی جنرل کانفرنس کے دوران اسرائیلی کوششوں کا نتیجہ سامنے آ جائے گا۔

ایک اسرائیلی ذریعے نے اسرائیلی میڈیا کو بتایا کہ "وزارت خارجہ کے نزدیک انٹرپول کا فلسطینیوں کو قبول کر لینا خطرناک پیش رفت ہو گی۔ اس سے فلسطینی ریاست کے قیام کے سلسلے میں فلسطینیوں کی کوششوں کو بہت مضبوطی حاصل ہو گی اور فلسطینیوں کی جانب سے انٹرپول کے پلیٹ فارم کو اسرائیل کو نقصان پہنچانے کے لیے استعمال کرنے کا قوی امکان ہو گا۔

ذریعے نے مزید بتایا کہ انٹرپول میں شمولیت کا ایک مقصد یہ بھی ہے کہ مطلوب افراد کے حوالے کیے جانے اور دیگر قانونی معاملات کے حوالے سے مطالبہ کرنے کی پوزیشن میں آیا جائے۔

انٹرپول تنظیم میں شمولیت کے واسطے فلسطینی اتھارٹی کو رائے شماری کے دوران دو تہائی حمایت کی ضرورت ہے۔ اسرائیل اس وقت تنظیم میں شمولیت کے لیے مطلوبہ معیار کو سخت بنانے کے لیے کام کر رہا ہے تا کہ فلسطینیوں کا انٹرپول میں شامل ہونا دشوار بنایا جا سکے۔ علاوہ ازیں اسرائیل اُس رائے شماری کو ملتوی کرانے کے لیے بھی کوشاں ہے جو فلسطینی درخواست پر منعقد کی جانی ہے۔