.

الجزائر : انتخابی مہم کے دل چسپ اور نرالے واقعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الجزائر میں مقامی انتخابات کے انعقاد کا وقت قریب آ رہا ہے اور اس حوالے سے جاری انتخابی مہم کے دوران دل چسپ ، پُر لُطف اور نرالے واقعات اور مواقف بھی سامنے آ رہے ہیں۔ نامزد امیدواروں کی جانب سے نعروں اور بینروں کی عبارتیں ظریفانہ موضوع میں تبدیل ہو کر سوشل میڈیا پر لوگوں کی ایک بڑی تعداد کے لیے دل چسپ ایونٹ بن گئی ہیں۔

اسی حوالے سے حکمراں جماعت نیشنل لبریشن فرنٹ پارٹی کے ایک امیدوار بشیری ابراہیم کا ایک دل چسپ انتخابی بینر سوشل میڈیا پر کافی مقبول ہو رہا ہے جس میں مذکورہ امیدوار نے اپنی تصویر کے نیچے جنوبی افریقہ کے آنجہانی رہ نما نیلسن منڈیلا کی تصویر لگائی ہے۔ اس کے نیچے یہ عبارت تحریر کی گئی ہے "نمبر پانچ کو منتخب کیجیے ۔۔ بشیری ابراہیم عُرف منڈیلا"۔

ملک کی ایک اور سیاسی جماعت "موومنٹ فار نیشنل ریفارم" کے ایک امیدوار نے البلیدہ کے علاقے میں اپنے پوسٹر پر تحریر کیا ہے کہ "ایسا شخص جس کے یہاں کسی پر ظلم نہیں ہوتا"۔

ادھر قسنطینہ شہر میں ایک خاتون امیدوار نے اعلان کیا ہے کہ منتخب ہونے کی صورت میں وہ بڑی عمر کے افراد کو عمرے کے سفر پر اور نوجوانوں کو ہنی مون پر بھیجیں گی"۔

حکمراں جماعت کے ایک دوسرے امیدوار نے اپنی مہم میں نرالا انداز اپناتے ہوئے انتخابی پمفلٹ کو منرل واٹر کی بوتلوں پر چپکا دیا تا کہ وہ زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچ جائے۔

الجزائر کے صوبے ام البواقی میں بعض شہریوں نے ایک بھیڑیے کو قتل کر کے اس کی لاش ایک انتخابی مہم کے پوسٹر پر لٹکا دی۔ اس اقدام کا مقصد ہر 5 برس بعد دُہرائے جانے والے انتخابی وعدوں پر اپنے غصّے کا اظہار کرنا ہے۔ بعض دیگر افراد نے سڑکوں پر سے تمام امیدواروں کے پوسٹروں کو ہٹا کر انہیں کچرے میں ڈال دیا۔

الجزائر میں مقامی انتخابات 23 نومبر ہوں گے۔ اس سلسلے میں 1541 بلدیاتی اور 48 ریاستی کونسلوں کے نئے امیدواروں کو 5 سال کے لیے چنا جائے گا۔ انتخابات میں 51 سیاسی جماعتوں کے نمائندوں اور آزاد امیدواروں سمیت 65 ہزار افراد کے درمیان مقابلہ ہو گا۔