.

مقتدی الصدر نے عراق میں خانہ جنگی سے خبردارکر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں الصدری گروپ کے سربراہ مقتدی الصدر نے ملکی صورت حال کے خطرے اور "خانہ جنگی کے آغاز" کے امکان سے خبردار کیا ہے۔

الصدر نے پیر کے روز "عراق خطرے میں ہے" کے نام سے عراقیوں کے واسطے ایک پیغام جاری کیا ہے۔ پیغام میں انہوں نے زور دیا کہ نشستوں ، منصبوں ، مفادات اور اثر و رسوخ کی خاطر لڑائی بند کر دیں۔ الصدر نے واضح کیا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ بیلٹ بکس جلانے یا انتخابات دوبارہ کروانے کے بدلے ہم ایک صف میں متحدہ ہو کر کھڑے ہو جائیں۔

الصدر کا کہنا ہے کہ اس وقت عراق میں پانی ، بجلی ، زراعت ، صنعت ، مال ، انفرا اسٹرکچر، خدمات ، بہتر ماحولیات اور محفوظ سرحدیں ان میں سے کوئی چیز موجود نہیں اور دشمن ہر سمت سے اس پر وار کر رہا ہے۔

انہوں نے باور کرایا کہ 2003ء میں صدام حکومت کے سقوط کے باوجود بعث پارٹی کے ظلم اور آمریت کے نشانات اب بھی عراق میں واضح ہیں۔

مقتدی الصدر کا یہ پیغام اتوار کے روز بغداد کے ضلعے الصرافہ میں بیلٹ بکسوں کے گودام میں لگںے والی آگ کے بعد آیا ہے۔

یاد رہے کہ الیکشن کمیشن کےسربراہ معن الہیتاوی پیر کے روز اس امر کی تصدیق کر چکے ہیں کہ مذکورہ آگ انتخابی نتائج کو کسی طور متاثر نہیں کرے گی۔