.

یمن : الحدیدہ کا ہوائی اڈہ آزاد ، بارودی سرنگیں صاف کرنے کا سلسلہ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی فوج کے میڈیا سینٹر نے ہفتے کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ الحدیدہ کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو حوثی ملیشیا کے قبضے سے آزاد کرا لیا گیا ہے۔ کارروائی میں یمنی فوج کو عوامی مزاحمت کاروں اور عرب اتحاد کی فورسز کی معاونت حاصل تھی۔

مزید یہ بھی بتایا گیا ہے کہ یمنی فوج کے انجینئرنگ شعبے کے اہل کاروں نے ہوائی اڈے اور اس کے اطراف علاقے کو بارودی سرنگوں اور دھماکا خیز آلات سے پاک کرنا شروع کر دیا ہے۔

اس سے قبل یمنی فوج نے جمعے کی شام ہوائی اڈے کے داخلی راستے پر کنٹرول حاصل کر لیا تھا۔

یاد رہے کہ الحدیدہ کو آزاد کرانے کے لیے عسکری آپریشن کا باقاعدہ آغاز 13 جون کو ہوا تھا۔

ہوائی اڈے کی اہمیت

واضح رہے کہ الحدیدہ کا ہوائی اڈہ تزویراتی اہمیت کا حامل ہے۔ یہ یمن کی دوسری بڑی اور تزویراتی بندرگاہ الحدیدہ سے 10 کلو میٹر سے بھی کم فاصلے پر واقع ہے۔ یہ بندرگاہ ایرانی ہتھیاروں کی حوثیوں کے لیے اسمگلنگ کے واسطے شہہ رگ کی حیثیت رکھتی ہے۔

الحدیدہ ہوائی اڈے کے پڑوس میں ایک فوجی فضائی اڈہ واقع ہے۔ حوثیوں کی جانب سے اسے عسکری کیمپوں میں تبدیل کرنے سے قبل یہاں فضائی دفاع کے کئی بریگیڈز تعینات تھے۔

الحدیدہ کے ہوائی اڈے کو آزاد کرا لینے سے الحدیدہ اور دارالحکومت صنعاء کے بیچ (16 کلومیٹر طویل) راستے پر راستے پر کنٹرول حاصل ہو جائے گا۔ اس طرح اس اہم راستے کے ذریعے حوثی ملیشیا کے لیے امداد اور کمک کی ترسیل منقطع ہو جائے گی۔