.

مراکش : نقل سے روکنے پر طالب علم کا استاد پر چُھرے سے حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مراکش کے ایک اسکول میں طالب علم کی جانب سے کلاس روم میں اپنے استاد پر چاقو سے وار کے واقعے نے تعلیمی حلقوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔

دارالحکومت رباط کے نزدیک واقع شہر سلا کے ایک اسکول میں پیر کے روز پیش آنے والے اس بھیانک جُرم نے ملک میں استاد اور طلبہ کے درمیان تعلق کی حقیقت کھول کر رکھ دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مذکورہ استاد نے کمرہ امتحان میں نگرانی کے دوران ایک طالب علم کو نقل کرتے ہوئے پکڑ لیا۔ استاد نے طالب علم کو اس عمل سے روک دیا تاہم طالب علم کو یہ بات پسند نہ آئی اور اس نے اپنے پاس موجود چُھرے سے استاد کے چہرے اور کان پر وار کر ڈالے۔ اس کے نتیجے میں استاد کو خطرناک ذخم آئے اور اسے فوری طور پر علاج کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

واقعے نے ملک میں تعلیمی حلقوں کے درمیان غم و غصّے کی لہر دوڑا دی ہے۔ اسکول کے اساتذہ کی جانب سے احتجاجی ریلی بھی نکالی گئی جس میں انہوں نے فرائض کی انجام دہی کے دوران اساتذہ کو تحفظ فراہم کیے جانے کا مطالبہ کیا۔

سلا شہر میں ایجوکیشن ڈائرکٹریٹ کے اعلان کے مطابق حملہ آور طالب علم کی گرفتاری اور تحقیقات کے لیے مطلوبہ اقدامات کر لیے گئے ہیں۔

مراکش میں حالیہ عرصے میں طلبہ کی جانب سے اساتذہ پر تشدد کا رجحان بڑھتا جا رہا ہے۔ ایک ماہ قبل سوشل میڈیا پر گردش میں آنے والی ایک وڈیو میں ایک طالب علم کو استاد کے منہ پر کھری کھری سناتے ہوئے دیکھا گیا۔ اس کے بعد طالب علم نے استاد کو زمین پر گرا کر اس کو لاتیں بھی رسید کیں۔ اس واقعے نے ملک میں ہنگامہ کھڑا کر دیا تھا۔