البغدادی موجود ہے مگر اس کو قائدانہ قدرت حاصل نہیں : بین الاقوامی اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

داعش تنظیم کے خلاف برسرِ پیکار بین الاقوامی اتحاد کے سرکاری ترجمان کرنل شون رائن کا کہنا ہے کہ عراق میں امریکی افواج اُس کی دعوت پر ملک میں رُکی ہوئی ہیں۔ الحدث نیوز چینل کے ساتھ انٹرویو میں رائن نے باور کرایا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ عراق میں ایران کا وجود ہے تاہم یہ اُن کے کام کو متاثر نہیں کر رہا ہے۔

رائن کے مطابق اگرچہ داعش کی تعداد بہت کم ہو چکی ہے تاہم داعش ایک مشکل دشمن ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ بین الاقوامی اتحاد تنظیم کے خلاف جنگ جاری رکھے گی۔

ترجمان کے مطابق عراق میں سیاسی صورت حال اس وقت دُشوار ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ "بین الاقوامی اتحاد کسی بھی ممکنہ خطرے کو سنجیدگی سے لے گا تاہم ہمارا اصل مقصد داعش کے خلاف لڑنا ہے"۔

کرنل شون رائن نے بتایا کہ کُرد فورسز عراقی افواج کے زیر انتظام ہیں اور بین الاقوامی اتحاد مرکزی حکومت کے ذریعے اُن کے ساتھ معاملہ کر رہا ہے۔

داعش تنظیم کے سربراہ ابوبکر البغدادی کے حوالے سے رائن نے توقع ظاہر کی کہ تنظیم کا سرغنہ کسی بھی جگہ ہو سکتا ہے تاہم وہ کسی بھی نوعیت کی قائدانہ قدرت نہیں رکھتا۔

شام کی صورت حال کے حوالے سے ترجمان نے واضح کیا کہ مختلف پیچیدگیوں کے پیش نظر وہاں کی صورت حال عراق سے مختلف ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں