مصر: تاریخی مقام میں شادی رچانے پر کاروباری شخصیت سے تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کے جنوب میں‌واقع الاقصر گورنری میں 'معبد کرنک' (کرنک ٹمپل) نامی ایک تاریخی مقام میں شادی رچانے پرسخت غم وغصے کی لہر دوڑ گئی ہے۔ دوسری جانب کرنک ٹمپل میں شادی کی تقریب منعقد کرنے اور بغیر اجازت کے 300 افراد کو وہاں جمع کرکے ہلا گلا کرنے پر متعلقہ خاندان کو تحقیقات کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

الاقصر میں سیاحتی کمپنیوں کے مشیر ثروت عجمی نے ایک بیان میں واقعے کی فوری انکوائری کا مطالبہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک مقامی کاروباری شخصیت نے تاریخی مقام کی اہمیت کو نظرانداز کرتے ہوئے وہاں پر بیٹے کی شادی کا اہتمام کیا تھا۔ عوام الناس میں اس اقدام پر سخت غم وغصہ پایا جا رہا ہے۔

ادھر دوسری جانب مصری وزارت سیاحت و آثار قدیمہ نے کہا ہے کہ ایک کاروباری کمپنی کی طرف سے معبد کرنک میں شادی کی تقریب منعقد کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔ حکومت اس کی تحقیقات کر رہی ہے۔

کرنک میں آثار قدیمہ کے ڈائریکٹر اور سپریم کونسل برائے آچار قدیمہ کے سربراہ مصطفیٰ وزیری نے پولیس اور دیگر حکام کو اس واقعے کی جامع تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ تاریخی مقام پر شادی کی تقریب غیرقانونی اقدام ہے اور اس میں ملوث تمام افراد کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں