.

صعدہ میں یمنی فوج حوثیوں کے سربراہ کے گھر کے قریب پہنچ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صوبے صعدہ میں سرکاری فوج نے حیدان ضلعے میں حوثی ملیشیا کے خلاف شدید لڑائی کے بعد بڑی پیش قدمی کی ہے۔ اس دوران یمنی فوجی حوثیوں کے سربراہ کے گھر سے صرف چھ کلو میٹر کی دوری پر پوزیشن لینے میں کامیاب ہو گئے۔

یمنی فوج کے تھرڈ بریگیڈ کے کمانڈر عبدالکریم السدعی کے مطابق ان کی فورسز نے مران کے پہاڑی علاقے کے علاوہ صافیہ ، رمادیات اور طیبان کے علاقوں میں کافی اندر تک پیش قدمی کی ہے۔ اس دوران حوثی ملیشیا کے ساتھ شدید معرکہ آرائی میں باغیوں کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا۔ یمنی فوج کو کارروائی کے دوران عرب اتحاد کے طیاروں اور توپ خانوں کی معاونت بھی حاصل رہی۔

دوسری جانب یمنی فوج نے صعدہ صوبے کے ضلعے باقم میں حوثی باغیوں کے خلاف مؤثر اور فیصلہ کن کارروائی شروع کردی۔ کارروائی میں عرب اتحاد کی فضائیہ کی معاونت حاصل ہے۔ اتحادی لڑاکا طیاروں نے اتوار کے روز باقم میں فوجی کارروائی کے دوران حوثی ملیشیا کے اسلحہ ڈپوؤں اور فوجی گاڑیوں کو حملوں میں نشانہ بنایا۔ باغیوں کے ٹھکانوں پر ٹینکوں سے گولہ باری بھی کی گئی۔

العربیہ کے ذرائع کے مطابق یمنی فوج نے ضلع باقم پر تین اطراف سے حملہ کیا اور یہ ضلع اب یمنی فوج کے کنٹرول میں آنے کے قریب ہے۔ یمنی فوج نے ابواب الحدید کے پہاڑی علاقے میں حوثیوں کے ٹھکانوں پر ایک شدید حملہ کیا۔

یمنی فوج نے پہاڑ ی علاقوں میں بہت سی چوکیوں پر کنٹرول حاصل کر لیا اور وہاں سے حوثی باغی بھاگ کھڑے ہوئے۔ فوج نے تزویراتی اہمیت کے حامل ان اہم مقامات پر پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے۔